سندھ ہیلتھ کیئر کمیشن نے لائسنس کیلئے نجی و سرکاری اسپتالوں کی انسپکشن شروع کردی

کراچی ()سندھ ہیلتھ کیئر کمیشن (ایس ایچ سی سی)نے سندھ کے بڑے نجی اور سرکاری اسپتالوں کا معائنہ شروع کردیا تاکہ ان اداروں کو ریگولر لائسنس کا اجراء کیا جاسکے۔

تفصیلات کے مطابق ایس ایچ سی سی اب تک 11491اسپتالوں کی رجسٹریشن مکمل کرچکی ہے اور جبکہ 493صحت کےمراکز کو عبوری لائسنس کا اجراء بھی کیا جاچکا ہے۔ عبوری لائسنس حاصل کرنے والے اسپتال اب ریگولر لائسنس حاصل کرسکتے ہیں لہذا کمیشن کی طرف سے ان اداروں کی انسپکشن کا عمل شروع کردیا گیا ہے۔

کمیشن نے اب تک چھ بڑے اسپتالوں جس میں آغا خان یونیورسٹی اسپتال ، ضیاء الدین اسپتال نارتھ ناظم آباد ، میمن میڈیکل انسٹیٹیوٹ اسپتال , میمن اسپتال برنس روڈ، نیشنل میڈیکل سینٹر اور بحریہ ٹاون اسپتال کراچی کا انسپکشن کر ليا ہے ۔ لائسنسنگ کے ڈیپارٹمٹنٹ نے صحت کی سہولیات فراہم کرنے والے ڈاکٹرز کو ان کے مراکز پر رجوع کیا ہے تاکہ رجسٹریشن اور لائسنسنگ کے حوالے سے ان کو رہنمائی فراہم کی جاسکے۔

مزید پڑھیں: فضائی بیڑے میں جے۔10 سی جہازوں کی شمولیت کی مناسبت سے ملی نغمہ جاری

رجسٹریشن مہم ضلع سجاول اور ٹھٹھہ کے دیہی علاقوں جس میں جھرک ، جھوک، گھارو، میرپور ساکرو ، جاتی ، سجاول سٹی ، ٹھٹھہ سٹی، دڑواور بٹھورو میں جاری ہے۔ اس مہم میں 80 فیصد ریسپانس ملا ہے جو قابل تحسین ہے۔ ایس ایچ سی سی ایکٹ 2013کے تحت کمیشن کو مینڈیٹ حاصل ہے کہ وہ صحت کے مراکز کی رجسٹریشن کو یقینی بنائیں اور عملدرآمد نہ کرنے اور رجسٹریشن نہ کرنے والے مراکز پر تادیبی کاروائ کريں-

لائسنسنگ کے ڈیپارٹمٹنٹ کا بنیادی مقصد ڈاکٹروں کو اس حوالے سے آگاہی ، حوصلہ افزائی اور سہولت فراہم کرنا ہے ۔ لائسنسنگ کے ڈیپارٹمٹنٹ کے ڈائریکٹر ڈاکٹر الطاف خواجہ نے کہا کہ کمیشن رجسٹریشن مہم میں تعاون نہ کرنے والے مراکز کے خلاف کارروائی کا حق رکھتا ہے۔

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *