جعلی صحافیوں کے خلاف گھیرا تنگ کرنے کا فیصلہ

جعلی صحافی کون ہیں ؟

جعلی صحافی وہ ہیں جو ان اخبارات کے نمائندے ہیں جو کبھی پرنٹ نہیں ہوئے اور صرف واٹس ایپ گیس بک پیج یادیگر سوشل نیٹ ورک تک محدودہیں۔

اوران اخبارات کےمالکان نے نمائندگی کی نیلامی مہم اپنے سوشل نیٹ ورک پرچلارکھی ہے اور ہزار دوہزارروپوں میں اپنے اخبارکاٹھپہ لگاکرہراس شخص کونمائندہ بنادیتےہیں جسے خبرتک لکھنی نہیں آتی

اب تک سوشل میڈیاپرہزاروں کی تعدادمیں PDF ڈمی اخبارات کی بھرمارہے لہذاآپ اپنے پیسے اور قابلیت کودرست جگہ پراستمعال کریں اور باقاعدہ تصدیق شدہ پیپر ABC سرٹیفائڈ پیرکی نمائندگی حاصل کریں اور اپنی اچھی شہرت بناٸیں

آجکل واٹس ایپ گروپس میں نیوز چینل نیٹ ورک کی بھی برسات ہورہی ہےہزاروں یوٹیوب فیس بک ودیگر جعلی چینلزنے کارڈ بیچنے کاسلسلہ شروع کیاہواہے 2 یا 3 ہزارنمائندگی فیس اور پانچ سو ہزار روپے نیوز بیک اپ فیس پر سادہ لوح لوگوں اور صحافت کا شوق رکھنے والے احباب کو لوٹ رہے ہیں

یہ سب جعلی اور فیک سسٹم کاحصہ ہیں ان اخبارات اور چینلزکاکوئی وجودنہیں ایسے اخبارات کے نمائندگان جعلی نمائندگان تصورہونگے اور حکومت بہت جلداس جعلسازی پر کاروائی کرنےکاارادہ رکھتی ہے توآپ تمام احباب سے گزارش ہے کہ اپنی غلطیاں درست کرلیں اور لیگل اخبار یا نیوزچینل کی نمائندگی حاصل کرکےاپنا اہم کرداراداکریں۔

ڈمی اخبارات اور نیوز چینل کا بائیکاٹ کریں اور اس پوسٹ کواپنے دیگرگروپس میں بھی شیئرکریں تاکہ مذیدلوگ لوٹنے سے بچ سکیں اور آئندہ آنے والی مشکلات سے نکل سکیں۔

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *