حرمین میں سیلفی و تصاویر کشی پر پابندی عائد

رپورٹ : عزیز الرحمن

مسجد الحرام اور مسجد نبویﷺ میں سیلفی لینے پر پابندی عائد کر دی گئی ہے ، عرب میڈیا کے مطابق سعودی حکومت نے ملک کے مقدس مقامات پر سیلفی لینے ، تصاویر بنانے اور ویڈیوز بنانے پر پابندی عائد کر دی گئی ہے۔

سعودی عرب حکومت کی جانب سے جاری کردہ اعلامیہ میں کہا گیا ہے کہ آئندہ سے مکہ مکرمہ میں مسجد الحرام اور مدینہ منورہ میں مسجد نبوی ﷺ کے احاطے میں کسی بھی قسم کی تصاویر اور ویڈیوز بنانے کی ہر گز اجازت نہیں ہوگی۔ ان مقامات پر تعینات سیکورٹی اہلکاروں کو بھی ہدایت کی گئی ہے کہ تصاویر اور ویڈیوز بنانے والوں کیخلاف موقع پر کارروائی عمل میں لائی جائے۔پابندی کی خلاف ورزی کرنے والوں کے موبائل فونز اور کیمرے ضبط کر لیے جائیں گے۔

سعودی حکام کا کہنا ہے کہ یہ اقدام مقدس مقامات کی حفاظت اور ان کا تقدس برقرار رکھنے کے پیش نظر اٹھایا گیا ہے۔ مزید کہا گیا ہے کہ مختلف ممالک سے آنے والے معتمرین اور حجاج حرمین شریفین میں اپنا زیادہ وقت تصویر کشی میں ضائع کرتے ہیں جس سے ان کی اور دوسروں کی عبادت میں خلل پڑتا ہے۔ یہ لوگ حرمین شریفین میں تصویریں بنا کر انہیں سوشل میڈیا پر اپ لوڈ کر دیتے ہیں۔لیکن اب ایسے معتمرین اور حجاج کرام جو اپنے موبائل فون، کیمرے یا وڈیو کیمروں کے ذریعے حرمین شریفین کے اندر یا باہر تصاویر بنائیں گے ان کے کیمرے اور موبائل ضبط بھی کئے جا سکتے ہیں ۔

اس حوالے سے معروف عالم دین اور جامعتہ خدیجتہ الکبری کے مہتمم مولانا داود خان کا کہنا ہے تصویر کشی جمہور علماء کے نزدیک حرام ہے ۔ اسلامی تعلیمات میں تصویر سے منع فرمایا گیا ہے اسلئے بعض علماء ڈیجیٹل تصویر کے جواز کا فتوی دیتے ہیں تاہم تصویر کسی بھی صورت میں ہو ایسے مقدس مقامات پر نہ بنانا بہتر ہے اور ویسے بھی ایسے مقامات پر جتنی عبادت کی جائے کم ہے ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں