پانچویں ڈی فیوچر سمٹ کے کا آغاز ہوگیا

کراچی: نٹ شی گروپ اور مارٹن ڈاؤ گروپ کے زیر اہتمام کراچی کے مقامی ہوٹل میں دو روزہ دی فیوچر سمٹ کے پانچویں ایڈیشن کا آغاز ہوگیا ہے۔ جس کے مہمان خصوصی گورنر سندھ عمران اسماعیل تھے جبکہ گورنر اسٹیٹ بینک آف پاکستان رضا باقر بھی خصوصی مہمان تھے۔

تقریب کے استقبالیہ میں سابق چیف آف ایئر اسٹاف ایئر چیف مارشل سہیل امان نے سمٹ کے ابتدائیہ خطاب میں کہا کہ پاکستان ایک مثبت سمت پر ہے اور جو لوگ دنیا کو تبدیل کرنا چاہتے ہیں انہیں چیلنجز کا سامنا ہوتا ہے۔ وباء کے باعث لوگ ایک دوسرے سے الگ ہوگئے ہیں لیکن انٹرنیٹ نے ہمیں آپس میں منسلک کر رکھا ہے. دی فیوچر سمٹ سے خطاب میں چیئرمین مارٹن ڈاؤ علی آکھائی نے زور دیا کہ اس وقت ہمیں ایک دوسرے کا خیال رکھنے اور اومی کرون سے بچاؤ کی مشترکہ کوششوں کی ضرورت ہے۔

مزید پڑھیں: شازیہ منظور کی انڈسٹری میں 10 سال بعد واپسی

تقریب سے خطاب میں پاکستان بزنس کونسل کے صدر احسان ملک کا کہنا تھا کہ ملک میں کورونا وباء کے دوران بہترین کام کیا گیا، ایسی صورتحال میں اسٹیٹ بینک کے مثبت اقدامات نے معیشت کو مستحکم کیا ہے یہی وجہ ہے کہ پاکستان کورونا وباء سے نمٹنے والے پانچ بہترین ملکوں میں شامل ہے۔

چیئرپرسن پاکستان اسٹاک ایکسچینج ڈاکٹر شمشاد اختر نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ حکومت کو اپنی انشورنس کمپنیوں کو پی ایس ایکس میں اندراج کرنا ہوگا، سال 2021 میں پی ایس ایکس کی کمپنیوں نے ریکارڈ منافع کمایا ہے جبکہ اسٹاک ایکس چینج میں اصلاحات کرتے ہوئے سرمایہ کاروں کو آسان موبائل اکاونٹ فراہم کرے گی۔ انہوں نے ماحولیاتی تبدیلی پر بھی بات کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان میں 2019 کے دوران 200 ملین ٹن گرین ہاؤس گیس اخراج ہوا جو 2030 تک 530 ملین ٹن سالانہ ہوجائے گا، گزشتہ 20 سالوں کے دوران ماحولیاتی تبدیلیوں نے آدھا فیصد جی ڈی پی کا نقصان کیا جو کہ 3.8 ارب ڈالر ہے۔

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *