مری جیسا سانحہ مغرب میں رونما ہوجاتا تو پوری حکومت مستفعی ہوچکی ہوتی، بشیراحمدقریشی

چلاس : جمعیت علما اسلام گلگت بلتستان کے ڈپٹی جنرل سیکرٹری بشیر احمد قریشی نے کہا کہ مری میں مرنے والے پاکستانی چیخ چیخ کر اپنے قاتلوں کا پتہ بتا رہے ہیں مگر قاتل ٹس سے مس نہیں ۔

انہوں نے کہا مغرب میں خدانخواستہ ایسا سانحہ رونما ہوجاتا تو پوری حکومت مستفعی ہوچکی ہوتی۔

بشیر احمد قریشی نے کہا کہ مری سانحہ حکومتی غفلت کی وجہ سے رونما ہوا ، سانحے سے قبل وفاقی وزیر فواد چوھدری میڈیا پر کہہ رہے تھے ملک میں خوشحالی ہے اسی لئے عوام مری کا رخ کر رہی ہے، عوام کی بڑی تعداد کو اکسا کر مری بھیجنے والے کس منہ سے آج مری جانے والوں کو قصوروار ٹھہرا رہے ہیں ۔

انہوں نے مزید کہا کہ محکمہ موسمیات کی جانب سے الٹ جاری کرنے کے باوجود عوام کو مری جانے سے نہ روک کر حکومت نے مری کو انسانی سانحہ سے دوچار کر دیا ہے۔

انہوں نے کہا پی ایم ہاوس کے قرب میں واقع مری میں انسانیت مر رہی تھی اور بنی گالہ سے دفتر تک ہیلی کاپٹر استعمال کرنے والے نااہل وزیر اعظم کا ہیلی کاپٹر مری میں انسانوں کو بچانے کے کام نہ آسکا۔

بشیر احمد قریشی نے کہا کہ عمر بھر شوکت خانم اور نمل کے نام پر سیاست کرنے والے نالائق عمران خان کا مسخ شدہ چہرہ قوم کے سامنے عیاں ہو گیا ہے ۔

انہوں نے کہا انسانی فلاح کے نام پر چندے کھانے والے ہمسائیگی میں انسانی سانحے کے دوران حکومت میں ہونے کے باوجود ایسے غائب رہے گویا مری میں کچھ ہوا ہی نہیں۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ مری واقعہ کے دوران سرکاری عمارتوں کو خالی کروا کر بھی انسانی جانوں کو محفوظ کیا جا سکتا تھا مگر نااہل حکومت کے سر پر جوں تک نہیں رینگی۔

انہوں نے سانحہ مری کو قومی سانحہ قرار دیتے ہوئے حکومتی غفلت پر بھرپور قابل مذمت کی۔

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *