مقبوضہ کشمیر انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کا بہترین عکاس ہے، غزالہ حبیب

کراچی : مقبوضہ کشمیر انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کا بہترین عکاس ہے جہاں کسی کی جان و مال اور عزت وآبرومحفوظ نہیں اور گزشتہ باہترسالوں سے کشمیری اقوام متحدہ کے قرار دادوں کے مطابق حق خودارادیت کے حصول کے لیے جدوجہد میں مصروف ہیں۔عالمی برادری میں مسئلہ کشمیر کو اجاگر کرنے کیلئے پاکستانی سفارتخانوں کشمیر ڈیسک قائم کیا جائے۔ان خیالات کا اظہار مقررین نےانسانی حقوق کے عالمی دن کے حوالے سے فرینڈز آف کشمیر انٹرنیشنل اور کراچی پریس کلب کی ادبی کمیٹی کے اشتراک سےمنعقدہ سیمینار کا اہتمام کیا گیا ۔

سیمینارکا عنوان مقبوضہ جموں وکشمیر میں انسانی حقوق کی خلاف ورزیاں اور اہل قلم تھا۔سیمینار سےچیئرپرسن فرینڈز آف کشمیر انٹرنیشنل غزالہ حبیب،پی ٹی آئی رکن سندھ اسمبلی راجہ اظہر، سابق ڈپٹی اسپیکرسندھ اسمبلی راحیلہ ٹوانہ ، اویس ادیب انصاری ،سردار اورنگ زیب ، بشیر سدوزئی ،جمشید حسین، رونق حیات ودیگر نے خطاب کیا۔

چیئرپرسن فرینڈز آف کشمیر انٹرنیشنل غزالہ حبیب نے اپنے خطاب میں مقبوضہ کشمیر میں کشمیریوں کی روزمرہ کی زندگی اور انہیں درپیش مشکلات اور مسائل سے آگاہ کرتے ہوئے کہا کہ مقبوضہ کشمیر انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کا بہترین عکاس ہے۔ دنیا میں انسانی حقوق کی کی خلاف ورزیوں کے حوالے سے کشمیر کا خطہ پہلے نمبر پر ہے جہاں بھارتی حکومت اور فوج ظلم و بربریت کا بازار گرم کیے ہوئے ہے۔ کشمیر کے مسلمانوں کو بنیادی انسانی حقوق تک حاصل نہیں ہیں اور وہ گزشتہ باہتر سال سےآزادی سے جینے کا حق حاصل کرنے کے لئے بھارتی جبرو تشدد کی چکی میں پس رہے ہیں۔ حکومت پاکستان کو چاہیئے کہ عالمی برادری میں مسئلہ کشمیر کو اجاگر کرنے کیلئے پاکستانی سفارتخانوں میں کشمیر ڈیسک قائم کرے۔

تحریک انصاف کے رکن سندھ اسمبلی راجہ اظہرنے خطاب میں کہا کہ جموں کشمیر میں بھارتی مظالم پر عالمی برادری کی خاموشی نہتّے کشمیریوں کے ساتھ زیادتی ہے۔ کشمیریوں کے ساتھ جانوروں سے بھی بدتر سلوک کیا جا رہا ہے، تحریک انصاف کشمیریوں کے حقوق پر سمجھوتہ نہیں کرے گی ۔ پہلے کشمیر اور پھر بھارت سے تجارت کا اصول اپنا یا ہے ، وزیراعظم عمران خان نے کشمیر کا مقدمہ عالمی فورمز پر پیش کرکے خود کو کشمیر کا حقیقی سفیر ہونے کا ثبوت دیاہے ۔ دنیا کے سامنے بھارت کا اصل چہرہ ظاہر کیا ہے۔

سابق ڈپٹی اسپیکر سندھ اسمبلی راحیلہ ٹوانہ کا کہنا تھا کہ آج عالمی طاقتوں کی یہ ذمہ داری بنتی ہے کہ وہ کشمیر میں جاری انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزیوں کا نوٹس لیں اور کشمیریوں کو ان کا حق خود ارادیت دلانے کے لئے اپنا کردار بھرپور طریقے سے ادا کریں تا کہ کشمیری بھارت کے ظلم جبر و استبداد کے شکنجے سے نکل سکیں۔ کشمیری شاعر سردار اورنگ زیب خان نے کہا کہ آج کشمیر میں نام نہاد سرچ آپریشن کے بہانے کشمیریوں کو ان کے گھروں میں بھی تحفظ حاصل نہیں ہے ۔پوری کشمیری قیادت پابند سلاسل ہے۔

بشیرسدوزئی نےاپنے خطاب میں کہا کہ مودی کے ہندوتوا کے جنون اور کشمیر پر بزور طاقت قبضے کی خواہش کی وجہ سے پوری کشمیری وادی ایک انسانی جیل کی صورت اختیار کر چکی ہے۔بھارت کشمیرکی جغرافیائی حیثیت میں تبدیلی لانے کیلئے دن رات جعلی ڈومیسائل جاری کرنے کی مذموم پالیسی پر عمل کر رہا ہے۔

قبل ازیں کراچی پریس کلب کے سابق سیکریٹری ارمان صابر نے آمد پر شرکا کا شکریہ ادا کرتے ہوئے فرینڈز آف کشمیر انٹرنیشنل کی چیئرپرسن غزالہ حبیب کی تحریک کشمیر کیلئے جدوجہد پر خراج تحسین پیش کرتے ہوئے کا کہ بھارتی وزیراعظم نریندر مودی کیخلاف امریکا میں مقدمہ درج کرانے میں بھی غزالہ حبیب پیش پیش رہیں ۔ اور جب نریندرمودی امریکی شہر ہیوسٹن میں بھارتی کمیونٹی سے خطاب کیلئے پہنچا تو ہزاروں افراد کی قیادت کرتے ہوئے تاریخی ریلی نکالی ۔ جس میں کشمیری اور سکھوں سمیت انسانی حقوق کے نمائندے اور سماجی تنظیموں کے اہلکار شریک تھے۔

سیمینار کے اختتام پر قرارداد بھی منظور کی گئی جس میں مسئلہ کشمیر اجاگر کرنے کیلئے حکومت پاکستان سے مسئلہ کشمیر کیلئے کشمیر سے تعلق رکھنے والاخصوصی نمائندہ مقرر کرنے اور دنیا بھر میں قائم پاکستانی سفارتخانوں میں کشمیر ڈیسک قائم کرنے کامطالبہ کیا گیا تاکہ عالمی برادری کو مقبوضہ کشمیر میں بھارتی مظالم کی تازہ صورتحال سے مسلسل آگاہ کیا جائے۔

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *