سندھ مدرستہ الاسلام یونیورسٹی میں ورلڈ ٹیلیویژن ڈے کا انعقاد

سندھ مدرستہ الاسلام یونیورسٹی میں نمائش کا انعقاد

کراچی : ہم ٹیکنالوجی میں تو ترقی کرتے جارہے ہیں مگرشعوری طور پر تنزلی کی طرف جارہے ہیں، ہمارے ملک میں بہترین اور معیاری مواد دکھانے اور لکھنے کا بہت فقدان ہے۔ ان خیالات کا اظہار شوبز اور میڈیا انڈسٹری سے تعلق رکھنی والی نامور شخصیات نے سندھ مدرستہ الاسلام یونیورسٹی کے میڈیا ٹریننگ سینٹرکی جانب سے ورلڈ ٹیلویژن ڈے کے موقع پرمنعقدہ سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔

تقریب سے خطاب کرتے ہوئے نامور اداکار اور ہدایت کار تنویر جمال نے کہا کہ ماضی میں ٹی وی کا جو مواد تھا وہ رشتوں کو جوڑتا تھا اب ہم رشتوں کو ٹوٹتے ہوئے دکھاتے ہیں، ہمارا معیار دن بہ دن تنزلی کا شکار ہوتا جارہا ہے۔ پہلے ایک ڈرامہ لکھنے میں سال لگ جاتا تھا اور ایک جملہ بولنے کیلئے ایک ایک ہفتے تک ریہرسل کرنی پڑتی تھی مگر آج کل یہ سب نہیں ہوتا۔

نامور صحافی مظہر عباس نے کہا کہ 74 برسوں میں ہم نے ٹیکنالوجی میں ترقی کی مگر شعوری طور پر ہم تنزلی کی طرف گئے۔ اس وقت صحافیوں کیلئے لکیر کھینچ دی گئی ہے کہ آیا آپ اس طرف ہیں یا ا¾س طرف ہیں جبکہ آج کے اینکرز اداکار اور اداکار اینکر بن چکے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ جب 24 گھنٹے کی ٹرانسمیشن شروع ہوئی تو اس وقت ہماری میڈیا انڈسٹری بلکل بھی تیار نہیں تھی۔ آج کل اخبار کے ایڈیٹوریل کو مارکیٹنگ مینجر کنٹرول کرتا ہے۔ ہمیں نت نئے آئیڈیاز اور مثال لازمی پیدا کرنی پڑینگی۔

انہوں نے مزید کہا آنے دنوں والے دنوں میں لوگوں کو اندازہ نہیں ہے کہ مہنگائی کا کتنا بڑا طوفان آنے والا آئی ایم ایف سے جو معاہدہ کیا گیا ہے وہ کتنا خطرناک ہے مگر ہمارا مسئلہ یہ نہیں ہے ہمارا مسئلہ آڈیو ویڈیو اسکینڈلز ہیں۔

وائس چانسلر سندھ مدرستہ الاسلام یونیورسٹی کے وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر مجیب الدین صحرائی میمن نے کہا کہ ٹی وی میں اس وقت منطقی تبدیلی کی جانب جارہے ہیں مگر ٹی وی میں معیاری مواد کی شدید کمی ہے۔ ہم سمجھتے ہیں کہ ہم اکیسویں صدی میں داخل ہوچکے ہیں مگر ہم ٹی وی پر کلچر ، معیاری مواد اور دیگر چیزوںکووقت نہیں دے پارہے ہیں۔پی ٹی وی کا جب دور تھا اس وقت ٹی وی کانٹینٹ اور ڈراموں کا ایک معیار تھا جو کہ اب بلکل بھی نہیں ہے۔

اس موقع پر قیصر خان نظامانی ، ناجیہ اشعر، مسعود رضا، کیف غزنوی اور اکبر سبحانی نے بھی خطاب کیا۔

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *