حکومت اور کالعدم تنظیم کے درمیان مذاکرات کی اندرونی کہانی سامنے آگئی

لاہور: حکومت اور کالعدم تنظیم کے درمیان مذاکرات کا معاملہ،اندرونی کہانی سامنے آگئی ،مذاکرات میں مفتی منیب الرحمان ان اور اہلسنت علما کمیٹی آؤٹ کیسے ہوئی ؟

ذرائع کےمطابق اہلسنت علما کی مصالحتی کمیٹی سعد رضوی کی حکومت کی طرف سے گارنٹی مانگنے پر پیچھے ہٹ گئی،مفتی منیب الرحمان ایک صحافی اور ایک تاجر کے ذریعے آرمی چیف سے ملاقات میں کامیاب ہوئے۔

مفتی منیب نے سعد رضوی کی طرف سے آئندہ کسی قسم کے دھرنے اور لانگ مارچ نہ کرنے کی ضمانت دی ہے ،اہلسنت علما کی مصالحتی کمیٹی نے سعد رضوی کی گارنٹی سے انکار کردیا تھا ۔

ذرائع کے مطابق وزیر اعظم عمران خان سعد رضوی کی رہائی پر آمادہ نہیں تھے ۔نئے معاہدے میں کالعدم تنظیم فرانسیسی سفیر کو ملک بدر کرنے کے مطالبے سے دستبردار ہوگئی ۔
اہلسنت علما کی سعد رضوی سے ملاقات مفتی منیب الرحمان کے مذاکرات میں شامل ہونے کے بعد نہ ہوسکی

نئے معاہدے کے مطابق ٹی ایل پی کے مقدمات کارکنوں کی رہائی اور کالعدم جماعت کی حیثیت پر فیصلے عدالت کرے گی
ذرائع کے مطابق اپیل کے باوجود صاحبزادہ حامد رضا ،ابوالخیر زبیر اور جلیل شرقپوری نے حکومتی مزاکراتی ٹیم کے ساتھ پریس کانفرنس سے انکار کردیا ۔

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *