سپریم کورٹ ڈھائی لاکھ اسٹوڈنٹس کے مستقبل کو تاریک ہونے سے بچائے،کنور محمد دلشاد

اسلام آباد : کنور محمد دلشاد سابق وفاقی سیکرٹری الیکشن کمیشن آف پاکستان و چیئرمین نیشنل ڈیموکریٹک فا ؤنڈیشن نے اپنے بیان میں کہا ہے کہ وزارت تعلیم اور اس کے متعلقہ اداروں کی ناقص اور عدم دلچسپی کی وجہ سے ڈھائی لاکھ سے زائد طلبا و طالبات اگلی جماعت میں جانے سے محروم کر دئے گئے ان کا سال ضائع ہوچکا ہے جس کے لیے وزارت تعلیم ہائر ایجوکیشن کمیشن اور متعلقہ اداروں کو راست قدم اٹھاتے ہوئے ان طلباء و طالبات کا مستقبل مخدوش ہونے سے بچانے کے لئے لائحہ عمل تیار کرے۔

کنور محمد دلشاد نے وزیراعظم کی توجہ اس امر کی طرف مبذول کراتے ہوئے کہا ہے کہ اس سال میٹرک کے سالانہ امتحانات کے نتائج ملک کے بیشتر تعلیمی اداروں کے طلبا و طالبات نے گیارہ سو میں سے ایک ہزار سے زائد نمبر لے کر ورطہ حیرت میں ڈال دیا ہے ہے جسکی ممکنہ قباحتوں پر تعلیمی حلقوں کی طرف ان اداروں کی نا اہلیت پر سوالات اٹھتے ہیں۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق ڈھائی لاکھ سے زائد طلباء و طالبات اس لئے فرسٹ ایئر میں داخلے سے محروم ہو جائیں گے کہ غیر معمولی طور اعلیٰ نتائج سے کالجوں کے میرٹ میں اضافہ ہوگا۔

کنور محمد دلشاد نے چیف جسٹس آف پاکستان سے ڈھائی لاکھ طلباء وطالبات کے مستقبل کو غیر یقینی صورتحال سے بچانے کے لیے لئے آئین کے آرٹیکل 184 کے تحت از خود نوٹس لیتے ہوئے وفاقی وزیر تعلیم کو ذاتی حیثیت سے پیش ہونے کے احکامات صادر فرمائیں۔

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *