تعلیم کے ساتھ کھلواڑ پہ کھلواڑ

تحریر : عزت اللہ خان

سر محمد اکرم نے 65سال سے پڑھائی جانے والی سندھ ٹیکسٹ بک بورڈ کی میٹرک ،انٹرمیٹیٹ کی انگلش کی کتابوں میں غلطیوں کے نشاندہی کر کے ان کتابوں کو 80% غلط ثابت کیا ۔
1۔سر محمد اکرم کے اس دعوی کی الیکٹرونک میڈیا (سما نیوز ) نے کراچی یونیورسٹی کے انگلش ڈپارٹمنٹ سے تصدیق کرو اکے اس سنسنی خبر کو 23-08-2015اور 27-08-2015
کو نشر کیا جو کہ اُمت اخبار میں بھی شائع ہوا۔

2۔ بعدازاں 27-08-2015کو محکمہ تعلیم نے اس رپورٹ پر نوٹس لیا اور پانچ رکنی کمیٹی تشکیل دی ۔
3۔ محکمہ تعلیم نے سر محمد اکرم کے ساتھ میٹنگ کال کی ، آپ نے چیئر مین سندھ ٹیکسٹ بک بورڈ ،چیئر پر سن نصاب،ڈائر یکٹر نصاب ماہر انگلش سبجیکٹ کے ساتھ میٹنگ میں اپنا مئو قف ثابت کیا
4۔ اس میٹنگ کے بعد آپکو اس کمیٹی کی طرف سے حیدر آباد بلایا جانے کا میسج اور کتابوں کی رفار منگ کیلئے ای میل موصل ہوئی ۔

5۔ سندھ نصاب کو نسل کے لئے جاری کر دہ نوٹیفیکیشن نمبر SO(G-1) E&L(Curriculum)2015کے مطابق اس کے چیئر مین وزیر تعلیم ،وائس چیئر مین سیکریٹری ایجو کیشن اینڈ لیبر سی ڈپارٹمنٹ اس کے تیرہ ممبران میں صوبائی اسمبلی کی ایجو کیشن اسٹینڈ نگ کمیٹی کے چیئر پر سن سندھ ٹیکسٹ بک بورڈ ڈائر یکٹر کیر یکلم ،ڈی جی پی آئی ٹی ای ، ایگز یکٹو ڈائر یکٹر اسٹیڈا ، تعلیمی بورڈ کے ایک ایک چیئر پرسن ، سندھ سندھ یونیورسٹی کے فکیلیٹی آف ایجو کیشن کے ڈین ڈائر یکٹرز اسکول ایجو کیشنز ، کیر یکلم کے ایک ماہر ، کار پوریٹ سو کل کے ایک ذمہ دار پرائیویٹ اسکولز منیجمنٹ کے ذمہ دار سمیت دیگر شامل ہیں جبکہ کیئر یکلماور ٹیکسٹ بکس کے حوالے سے قائم ایڈوائری کمیٹی میں 24ممبران ہیں جس میں سیکریٹری تعلیم سمیت شہر کی بڑی یونیور سٹیز کے ماہرین پروفیسرز شامل کئے گئے ہیں ۔

6۔ یاد رہے کہ کیر یکلم ڈپارٹمنٹ ہر سال کتابوں کو جائزہ کرنے کے پابند ہے ۔

7۔ بد قسمتی سے اس میسج اور ای میل میں ہی اتنی ساری غلطیاں تھیں کہ سر محمد اکرم نے اس میسج اور ای میل کو اگے سیکریٹری ایجو کیشن ، چیئر مین سندھ ٹیکسٹ بک بورڈ چیئر پر سن کیر یکلم کو فار وڈ کیا اور اس بد قسمتی کا اظہار کیا کہ جن سبجیکٹ اسپیشلسٹ کے ایک میسج اور ای میل میان ہی اتنی ساری غلطیاں ہوں وہ کس طرح سے کتابوں کی غلطیاں نکالنے کے قابل ہو سکتے ہیں ، جس پر سیکو یٹری ایجو کیشن اور چیئر مین کی طرف سے کوئی جواب نہ آیا

(31-10-2018) کو سر محمد اکرم یہ ساری شکایت وزیراعظم کے پورٹل پہ جمع کروایا جس پر بلآخر(13-10-2019) Director Curriculum Assessment & Researchسے لیٹر موصول ہوا جس میں سر محمد اکرم کے کاوشوں کو سراہایا گیا اور دعوع کیا گیا کے ٹیسٹ بکس کوRevised & Updated کیا گیا ہیاور لیکن افسوس کے ساتھ قوم سے ایک بار پھر جھوٹ بولا گیا ہے اور نئی نسل کی تعلیم کے ساتھ کھلواڑ پہ کھلواڑ کیا جا رہا ہے کہ ایک لفظ بھی نہ Revised کیا گیا ہے اور نہ ہی Updatedکیا گیا ہے

9۔اور یہ لیٹر سر محمد اکرم کے اس دعوع کی عکاسی کر رہا ہے کہ Curriculum Assessment & Research Depertment دراسل بکس میں غلطیوں کی نشاندہی کرنے کی ہی قابلیت نہیں رکھتا ۔

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *