آپ بیتی ، جاب بیتی – پروفیسر سراج الدّین قاضی

تحریر: زاہد احمد

سندھ کے کالج اساتذہ کی تنظیم ‘ سندھ پروفیسرزاینڈلیکچررز ایسوسی ایشن ‘ ( سپلا ) کے حوالے سے پروفیسر سراج الدّین قاضی ، ایک جانامانااورمعتبرنام ہے ۔ پروفیسر سراج الدّین قاضی نے ، ‘باباٸے اساتذہ ٕکالجز سندھ’ پروفیسر ریاض احسن مرحوم کے کارواں کے ہراول دستے کے سپاہی کی حیثیت سے اپنی پوری زندگی ‘سندھ پروفیسرزاینڈلیکچررز ایسوسی ایشن’ کے پلیٹ فارم سے ، سندھ کے کالج اساتذہ کی خدمت اور انکے حقوق کے تحفّظ کی جدوجہد کرتے گزاردی ، وہ ‘سندھ پروفیسرزاینڈلیکچررز ایسوسی ایشن’ کراچی کے صدر سمیت تنظیم کے دیگر عہدوں پر بھی فاٸز رہے ۔

پروفیسر سراج الدّین قاضی نے اپنی طویل تعلیمی خدمات ، ‘سندھ پروفیسرزاینڈ لیکچررزایسوسی ایشن’ سے طویل وابستگی اور اپنی ذاتی زندگی سے متعلق واقعات ، مشاہدات اور تجربات کے تناظر میں اپنی یادداشتوں کو مجتمع کرکے قلمبند کرتے ہوٸے خودنوشت کی صورت میں کتابی شکل دے کر ” آپ بیتی ، جاب بیتی “ کے نام سے شاٸع کی ۔

مزید پڑھیں: انسانی حقوق کے بین الاقوامی کارکن احسن اونتو فورسز حملے میں شدید زخمی

پروفیسر سراج الدّین قاضی کی خود نوشت ” آپ بیتی ، جاب بیتی “ کی تقریب ِرونماٸی گزشتہ روز آرٹس کونسل کراچی میں منعقد ہوٸی ۔ تقریب کااہتمام ، ‘ بزم ِاساتذہ ٕاردو (رجسٹرڈ) سندھ نے اپنے نویں ‘یوم ِ تاسسیس’ کے موقع پر آرٹس کونسل کراچی کے تعاون سے کیا ۔ تقریب کا آغاز تلاوت ِ کلام ِپاک سے ہوا ، تلاوت اور نعت خوانی کی سعادت پروفیسر محمّد اکبرخان نے حاصل کی ۔ نظامت کے فراٸض ‘بزم ِ اساتذہ ٕاردو (رجسٹرڈ) سندھ’ کے معتمد ِعمومی پروفیسر ڈاکٹر عرفان شاہ اور پروفیسر شہناز نصیر نے انجام دٸیے ۔

تقریب کی صدارت پروفیسر ڈاکٹر حسن محمّد خان نے کی ۔ تقریب سے ‘ بزم ِاساتذہ ٕاردو (رجسٹرڈ) کے عہدیداران ، جناب سیّد اسجدبخاری ، پروفیسر ڈاکٹر عرفان شاہ اور محترمہ شازیہ ظہور سمیت سابق شیخ الجامعہ ، وفاقی اردو یونیورسٹی ، پروفیسر ڈاکٹر ظفراقبال ، ڈاکٹر صمدانی ، وفاقی اردو یونیورسٹی کے پروفیسر ڈاکٹر محمّد سعید خان اور مجھ ناچیز سمیت دیگر مقررین نے خطاب کیا ۔

مزید پڑھیں: PFUJ لانگ مارچ ، تاریخ کا اعلان اسلام آباد کنونش میں کیا جائے گا

اس موقع پر مقررین نے پروفیسر سراج الدّین قاضی کی خود نوشت ” آپ بیتی ، جاب بیتی “ کے حوالے سے مصنّف کے طرز ِ نگارش ، انکی تعلیمی خدمات اور کالج اساتذہ برادری حقوق کے لٸے ان کی گراں قدر جدوجہد اور خدمات کے حوالے سے اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوٸےان کی شخصیت کے دیگر پہلوٶں پر بھی گفتگو کی اور انہیں اس پیرانہ سالی میں بھی کالج اساتذہ کے حقوق کے لٸے جدوجہد جاری رکھنے پر زبردست الفاظ میں خراج ِ تحسین پیش کیا ۔

صدارتی خطاب میں پروفیسر ڈاکٹر حسن محمّد خان نے پروفیسر سراج الدّین قاضی کی خود نوشت ” آپ بیتی ، جاب بیتی “ اور ان کی شخصیت پر گفتگو کرتے ہوٸے انکی چوتھی تصنیف ” آپ بیتی ، جاب بیتی “ کو اردو ادب میں بہترین اضافہ قرار دیا ۔

نوٹ: ادارے کا تحریر سے متفق ہونا ضروری نہیں، یہ بلاگ مصنف کی اپنی رائے پر مبنی ہے۔

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *