سیکرٹری بلدیات سندھ کی زیر سالڈ ویسٹ ٹو انرجی کنورژن کے موضوع پر اجلاس

کراچی: (اسٹاف رپورٹر) سیکرٹری لوکل گورنمنٹ انجینئر سید نجم احمد شاہ کی زیر صدارت سالڈ ویسٹ ٹو انرجی کنورژن کے منصوبے کو عملی جامہ پہنانے کے حوالے سے ان کے دفتر میں اجلاس منعقد کیا گیا جس میں سیکرٹری توانائی اور ایم ڈی سالڈ ویسٹ بھی شریک تھے۔

شرکا اجلاس سے گفتگو کرتے ہوئے سیکرٹری لوکل گورنمنٹ نجم احمد شاہ کا کہنا تھا کہ حکومت سندھ نے کچرے سے توانائی پیدا کرنے کے جس منصوبے کا آغاز کیا ہے وہ ملکی تاریخ میں سنگ میل ثابت ہوگا اور مستقبل قریب میں توانائی کی ضروریات کو پورا کرنے کے لئے نہایت معاون اور مددگار ثابت ہوگا۔ نجم احمد شاہ نے کہا کہ منصوبے کے دیرپا نتائج سے فیض یاب ہونے کے لئے ضروری ہے کہ باقاعدہ منصوبہ بندی اور جامع پالیسی سازی کے عمل کے ذریعے تمام مراحل کو پایہ تکمیل تک پہنچایا جائے اور شفافیت کو خصوصی طور پر ملحوظ خاطر رکھا جائے۔

مزید پڑھیں: ایشیائی ٹیکسٹائل انڈسٹری ڈیجیٹلائزیشن سے فائدہ اٹھائے، مجید عزیز

اس حوالے سے سیکرٹری بلدیات انجینئر سید نجم احمد شاہ نے ہمارے نمائندے سے خصوصی گفتگوکرتے ہوئے بتایا کہ سالڈ ویسٹ ٹو انرجی کے منصوبے کے تحت ابتدائی طور پر کراچی میں واقع جام چاکرو نامی لینڈ فل سائٹ پر پلانٹ لگانے کی تجویز زیر غور ہے۔ نجم احمد شاہ کے مطابق کراچی سے روزانہ کی بنیاد پر جمع ہونے والے کچرے کو سائنسی عمل سے گزار کر کم و بیش 150 سے 200 میگا واٹ توانائی حاصل کی جاسکتی ہے۔

سیکرٹری بلدیات سندھ نے بتایا کہ عالمی سطح کے ماہرین کی مشاورت سے جدید ٹیکنالوجی سے مزین ویسٹ ٹو انرجی پلانٹ کی تنصیب سے قبل تمام قانونی تقاضوں کو پورا کیا جائے گا اور مکمل ٹرانسپرینسی کے ساتھ منصوبے کو مکمل کیا جائے گا۔ نجم احمد شاہ نے واضع کیا کہ سالڈ ویسٹ ٹو انرجی منصوبے کے دائرہ کار کو مرحلہ وار صوبے کے تمام اضلاع تک پہنچایا جائے گا اور اس امر کو یقینی بنایا جائے گا کہ حاصل شدہ توانائی کا مثبت اور تعمیری سرگرمیوں میں استعمال کیا جائے۔

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *