ڈاکٹر عامر طاسین کو آٹھویں مرتبہ قومی سیرت ایوارڈ کے اعزاز سے نوازا گیا

اسلام آباد : محقق اسکالر ،سیرت نگار ، ماہر تعلیم ڈاکٹر محمد عامر طاسین کو وزارت مذہبی امور و بین المذاہب ہم آہنگی کی سالانہ قومی سیرت کانفرنس میں قومی سطح پر آٹھویں مرتبہ سیرت مقالہ پر ایوارڈ کا اعزاز حاصل ہوا۔ وزارت مذہبی امور و بین المذاہب ہم آہنگی کی سالانہ سیرت کانفرنس جوکہ 11 اور 12 ربیع الاول کو منعقد ہوئی۔سالانہ سیرت کانفرنس میں ہر سال کی طرح اس سال بھی پورے پاکستان سے بہترین کتابوں ،رسائل و جرائد کے مصنفین کے علاوہ بہترین سیرت مقالہ نگار وں کو بھی اعزازات دیے گئے ۔

معروف اسکالر محقق، سیرت نگار ڈاکٹر محمد عامر طاسین جوکہ بین الاقوامی اسلامی یونیورسٹی بورڈ آف گورنر کے رکن، مجلس علمی فاؤنڈیشن کے ایگز یکٹیو ڈائیریکٹر اور سابق چیئر مین پاکستان مدرسہ ایجوکیشن بورڈ، ماہر تعلیم برائےمدارس ریفارم اور دیگر کئی اداروں کے اعزازی رکن بھی ہیں نے اس سال قومی سطح پر سیرت صدارتی ایوارڈ کا اعزاز قومی اسمبلی کے اسپیکر اسد قیصر اور وفاقی وزیر مذہبی امور ڈاکٹر نور الحق قادری سے وصول کیا۔

وزارت مذہبی امور و بین المذاہب ہم آہنگی کی جانب سے اس سال قومی کانفرنس کا عنوان "اتحاد و اتفاق کے لیےمساجد، مدارس، خانقاہ اورامام بارگاہ کا کردار تعلیمات نبوی ﷺ کی روشنی میں”مقرر تھا۔ ڈاکٹر عامر طاسین کو اس سے قبل 7 مرتبہ مختلف وزرائے اعظم پاکستان اور وفاقی وزیر مذہبی امور سے ایوارڈز بھی حاصل کرنے کا اعزاز رہا ہے۔

2006 میں عصر حاضر کے تقاضے ایک روشن خیال اعتدال پسند اسلامی معاشرے کی تشکیل و ضرورت،2008 بین التہذیبی اور بین الثقافتی تقارب و ہم آہنگی،2009 تعلیمات نبوی ﷺ اور عالمگیر تہذیب کا تصور،2011 تعلیم و تربیت میں ہم آہنگی، 2013 عدل اجتماعی کا تصور ،2014 سرکاری مناصب و ذرائع کا ذمہ دارانہ استعمال ،2019 ریاست مدینہ اور اسلامی فلاحی مملکت کا تصور اور اب آٹھویں مرتبہ بعنوان” اتحاد و اتفاق کے لیےمساجد، مدارس، خانقاہ اورامام بارگاہ کا کردار تعلیمات نبوی ﷺ کی روشنی میں قومی سطح پر آٹھویں مرتبہ یہ اعزاز حاصل ہوا ۔

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *