سندھ میں نومبر سے پرزن انفارمیشن مینیجمینٹ سسٹم شروع کیا جائے گا

کراچی: (18 اکتوبر 2021) جیل اصلاحات کے حوالے سے چیف سیکریٹری سندھ سید ممتاز علی شاہ اور وفاقی محتسب سید طاہر شہباز کی مشترکہ سربراہی میں اہم اجلاس سندھ سیکریٹریٹ میں منعقد ہوا۔ اجلاس میں وفاقی سیکریٹری محتسب شعیب صدیقی، سینیئر ایڈوائزر انوار حیدر، سیکریٹری قانون، آئی جی جیل سمیت دیگر افسران نے شرکت کی۔

اجلاس میں چیف سیکریٹری سندھ سید ممتاز علی شاہ نے بتایا کہ سندھ صوبے کے تمام جیلوں میں اصلاحات لائے جا رہے ہیں۔ اصلاحات کیلئے محکمہ تعلیم، صحت، سوشل ویلفیئر اور سول سوسائٹی کام کر رہی ہیں۔ جیل اصلاحات کے تحت اوور سائیٹ کمیٹیاں بھی تشکیل دی گئی ہیں۔ اوور سائیٹ کمیٹیوں میں عدلیہ، سول سوسائٹی، تعلیم و صحت کے ماہرین اور مخیر حضرات شامل ہیں۔ اجلاس میں محکمہ جیل کے حکام نے بتایا کہ صوبے کے جیلوں میں پرزن انفارمیشن مینجمنٹ سسٹم لگایا گیا ہے جس کا باقاعدہ آغاز 2 نومبر کو کیا جائے گا۔

اجلاس میں چیف سیکریٹری سندھ سید ممتاز علی شاہ نے کہا کہ پرزن انفارمیشن مینجمنٹ سسٹم سے جیلوں کی مانیٹرنگ اور انتظامی امور میں بہتری آئے گی۔ اجلاس میں آگاہی دیتے ہوئے بتایا کہ صوبے کے قیدیوں کی ویکسینیشن شروع کی گئی ہے۔ اور نئے آنے والے قیدیوں کا کورونا وائرس کے ٹیسٹ کیا جاتا ہے۔

مزید پڑھیں: ہری پور : مغل سپر لیگ سیزن (2) کرکٹ ٹورنامنٹ کی پر وقار افتتاحی تقریب

اجلاس میں آئی جی جیل نے آگاہی دیتے ہوئے بتایا کہ ٹھٹھہ، شہید بینظیر آباد اور ملیر جیلوں میں مزید بیریک بنانے کا کام کیا جا رہا ہے اور کراچی ویسٹ میں 800, تھرپارکر میں 300، قمبر شہدادکوٹ میں 200 اور کشمور ایٹ کندھکوٹ میں 300 قیدیوں کی گنجائش کے ڈسٹرکٹ پرزن بنائے جا رہے ہیں اور ڈسٹرکٹ پرزن میرپور خاص کو سینٹرل جیل پر اپگریڈ کیا گیا ہے۔

وفاقی محتسب نے حکومت سندھ کے جیل رفارمز کو سراہتے ہوئے کہا کہ حکومت سندھ نے جیل اصلاحات میں بہت اچھا کام کیا، انہونے کہا کہ تمام اوورسائیٹ کمیٹیاں جیل کا دورا کر کے اپنی رپورٹ دیں تا کہ ان اور وہ سندھ کے اصلاحات کو رپورٹ کا حصہ بنا کر سپریم کورٹ میں پیش کریں گے۔

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *