میرا پیمبر عظیم تر ہے۔۔۔۔

تحریر : فخرالزمان سرحدی

پیارے قارئین! مظفر وارثی کا کلام بھی کتنا پر اثر اور پر تاثیر ہے کہ سنتے ہی انسان پر ایک عجب سی کیفیت طاری ہو جاتی ہے۔ربیع الاول کا مہینہ ہے۔اس ماہ کی عظمت اور اہمیت کتنی ہے اس کا اندازہ انسان کو ہونے میں وقت درکار ہے۔مجھ جیسے نا چیز انسان کی کیا بساط کہ کچھ لکھنے کی جسارت کروں۔لیکن الفت اور محبت کی اندروں کیفیت تو اکساتی ہے کہ ربیع الاول کا ماہ مبارک کتنا حسین اور خوبصورت ہے کہ اس میں سب سے بڑے بادشاہ تشریف فرما ہوئے۔

کچھ تو لکھوں آپ صلی اللہ علیہ وسلم سے محبت کرنے والوں میں میرا نام بھی آ جائے۔ثناء وحمد ہے لب پر میرے اس ذات باری کی۔۔وہ جس نے میری کشت آرزو کی آبیاری کی۔جی چاہتا ہے اپنے اس کالم میں محسن انسانیت کے حوالے سے ٹوٹے پھوٹے الفاظ سے اپنی نگارش کی سوغات پیش کروں۔وہ دانائے سبل،ختم الرسل،مولائے کل جس نےغبار راہ کو بخشا فروغ وادئی سینا۔

کائنات کے خالق نے جب جہالت و گمراہی میں مبتلا انسان کی سسکتی کیفیت پر ترس کھایا توعرب کی سرزمیں میں انسانیت کی ہدایت و رہنمائی کے لیے اہتمام فرمایا۔یوں 12 ربیع الاول کے دن عبداللہ کے در یتیم اور آمنہ کے دلارے کی تخلیق ہوئی۔دنیا کے مناظر تبدیل ہوئے۔فارس کا آتشکدہ گل ہوا اور قیس و کسری کے محلات کے کنگرے گر پڑے۔گویا کہ انسان کی ہدایت کا پیغام دینے والے کی آمد ہوئی۔

مزید پڑھیں: ڈاکٹر عبدالقدیر خان کے انتقال سے پاکستان کے عوام ایک عظیم سائنسدان سے محروم ہو گئے.زاہب کمال خان

کمال ذات اس کی۔۔جمال ہستی حیات اس کی۔ اتر کر حرا سے سوئے قوم آیا۔۔۔اک نسخہ کیمیا ساتھ لایا۔کلمہ حق کی صدائے بازگشت سے ایک انقلاب آفریں منظر پیدا ہوا۔نگاہ عشق و مستی میں وہی اول وہی آخر۔۔۔وہی قرآن وہی فرقان وہی یسین وہی طہ۔شاہ کونین ،سرور کائنات نے جہالت کے خاتمہ کا آغاز قرآنی تعلیمات سے شروع کیا تو اپنے بھی مخالف بن گئے۔لیکن آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے انسانیت کی تعلیم و تربیت ایسے انداز سے فرمائی کہ ہر طرف رحمت الہی کی برسات۔یہی بات کہ رحمت اللعالمین کا لقب ملا۔

الطاف حسین حالی نے کیا ہی خوب فرمایا:- وہ نبیوں میں رحمت لقب پانے والا۔مرادیں غریبوں کی بر لانے والا۔۔۔مصیبت میں غیروں کے کام آنے والا۔وہ اپنے پرائے کا غم کھانے والا۔۔وہ عرب کا روشن ضمیر آقا جو شرح احکام حق،عظمت بشر، بندگی، حقیقت، شریعت، معرفت، ایمان، ایقان، قران، آخرت کا سبق سکھانے والے پیمبر کی زندگی کی ایک جھلک دیکھیں تو عقل حیران رہ جاتی ہے۔

مزید پڑھیں: ڈاکٹر عبدالقدیر خان نے پاکستان کوایٹمی قوت بناکر ناقابل تسخیر بنایا ، اے کیو خلیل

آپ نے کائنات کے ذرے ذرے کو رمز عشق الہی سمجھائے،عدل و انصاف کی حقیقت سے پردہ اٹھایا،تجلیات حق کی روشنی میں آداب محبت سکھائے،تاریک دلوں میں علم و عرفاں کی شمع جلانے آئے۔گویا کہ آئے راہ گزار زندگی میں رہنما بن کر۔کیوں نہ اس کی تعریف کریں جوشعور لایا،کتاب لایا،روز قیامت تک کا نصاب لایا۔ایک مشکیزہ،ایک چٹائی،ایک چارپائی،نہ خوش لباسی،نہ خوش قبائی،اس سلطان بحر و برکے حسن اخلاق کا تذکرہ بھی کتنا حسیں۔ قرآن کی صورت میں دیا ضابطہ زیست

نوٹ: ادارے کا تحریر سے متفق ہونا ضروری نہیں، یہ بلاگ مصنف کی اپنی رائے پر مبنی ہے۔

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *