اپنے حق کیلئے آوازاٹھانے والی بٹ خیلہ کی رہائشی شیبا گل باپ سمیت قتل

پشاور : اپنے حق کیلئے آوازاٹھانے والی بٹ خیلہ کی رہائشی ایک اور حواء کی بیٹی کوبااثرقبضہ مافیاوتخریب کارگروہ سے تعلق رکھنے والے عناصرنے ہمیشہ کیلئے خاموش کردیا،جوانسال مقتولہ نے تقریباً دوہفتے قبل چیف جسٹس سپریم کورٹ،پشاورہائی کورٹ،وزیراعلیٰ،آئی جی پی دیگرمتعلقہ حکام سے تحفظ اورانصاف فراہمی کی اپیل کی تھی،

رواں ماہ کی گیارہ تاریخ کومقتولہ مسماة شیباگل دخترکریم بخش نے پشاورپریس کلب میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہاکہ مقامی انتظامیہ کی ملی بھگت سے تخریب کارگروہ سے تعلق رکھنے والا مبینہ قبضہ مافیاہماری جدی پشتی گنگالان نامی جائیدادپرقابض ہے،عدالت میں ہمارے حق میں کئی فیصلے ہونے کے باوجودمتعلقہ ادارے ہماری دادرسی نہیں کررہے ہیں،وقار اخترعرف (ڈبا)اعجاز اختر پسران امیر زمان ساکنان گائوں خار بٹ خیلہ ملاکنڈڈویژن ودیگر افراد کاتعلق تخریب کارگروہ ہے جنہوں نے ہماری اراضی سے تقریبا70سے 80لاکھ کی زبردستی کٹائی کی اورچندروزقبل ہماری جائیداد سے تقریبا 50لاکھ روپے کی مٹی بھی فروخت کی،متذکرہ افرادہمیں جان سے مارنے سے سمیت سنگین نتائج کی دھمکیاں دے کرشدیدذہنی کوفت میں مبتلاکئے ہوئے ہیں،جس کیخلاف کارروائی کیلئے ہم نے متعلقہ حکام کوتحریری درخواستیں دی ہیں لیکن کوئی شنوائی نہیں ہورہی۔

دوہفتے قبل شیباگل نے جن خدشات کااظہارکیاتھامتعلقہ اداروںکی روایتی غفلت ومبینہ ملی بھگت سے ان کے مخالفین نے ان خدشات کوعملی جامہ پہنادیاہے،گزشتہ روزمقتولہ شیباگل اپنے والد کریم بخش کے ہمراہ کسی کام سے جارہی تھی کہ دونوں باپ اوربیٹی کوفائرنگ کرکے ابدی نیندسلادیاگیا۔

پولیس نے انعام اللہ ولد سلیم اصغرکیخلاف مقدمہ درج کرلیاہے تاہم ملزم کی گرفتاری عمل میں نہیں لائی گئی ہے،شیباگل کے ورثاء نے چیف جسٹس سپریم کورٹ،پشاورہائی کورٹ،وزیراعلیٰ،آئی جی پی ودیگرمتعلقہ حکام سے تحفظ اورانصاف فراہمی کیلئے کرتے ہوئے فریادکہا ہے کہ ہمیں ظالم درندوں کے شرسے بچایاجائے اوردوہرے قتل میں ملوث عناصرکوگرفتارکرکے قرارواقعی سزاء دی جائے۔

واضح رہے کہ شیباگل کی اپیل کی باوجود انہیں تحفظ فراہم نہ کرنا متعلقہ اداروں کی نااہلی کاواضح ثبوت ہے۔

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *