ڈاکٹر عائشہ عبدالرزاق کو فوری برطرف کیا جائے، مولانا محمد حنیف جالندھری کا مطالبہ

اسلام آباد : () وفاق المدارس العربیہ پاکستان کے جنرل سیکرٹری مولانا محمد حنیف جالندھری نے ناظرہ قرآن کریم کی تعلیم اور نصاب میں شامل دینی مواد کے خلاف ہرزہ سرائ کرنے والی خاتون کی وزارت تعلیم میں ٹیکنیکل ایڈوائزر کے طور پر تعیناتی کو تشویشناک قرار دیتے ہوئے فوری برطرفی کا مطالبہ کیا۔

انہوں نے کہا کہ مملکت خداداد میں سرعام ٹی وی چینلز پر ناظرہ قرآن کریم اور دیگر اسلامی تعلیمات کو ہدف تنقید بنانے والی خاتون ڈاکٹر عائشہ عبدالرزاق کی وزارت تعلیم میں مداخلت نسل نو کے ایمان اور مستقبل سے کھلواڑ کے مترادف ہے۔ مولانا جالندھری نے کہا کہ پاکستان ابھی تک اتنا بانجھ نہیں ہوا کہ تعلیم جیسے اہم معاملات ایسے فکری یتیموں کے رحم وکرم پر چھوڑ دئیے جائیں ۔

مزید پڑھیں: عدالت کی جامعہ کراچی میں ڈین فیکلٹی آف سائنس کی تقرری میرٹ پر کرنے کی ہدایت

تفصیلات کے مطابق وفاقی وزارت تعلیم میں حالیہ دنوں میں ایک خاتون ڈاکٹر عائشہ عبدالرزاق کو تکنیکی مشیر تعینات کیا گیا جن کی بعض نجی ٹی وی چینلز پر کی جانے والی گفتگو ریکارڈ پر موجود ہے جس میں وہ ناظرہ قرآن کریم اور دیگر دینی مواد کو نصاب میں شامل کرنے پر شدید تنقید کر رہی ہیں-

ایسی دین بیزار خاتون کی وزارت تعلیم میں تعیناتی کو جنرل سیکرٹری وفاق المدارس العربیہ پاکستان مولانا محمد حنیف جالندھری نے تشویشناک قرار دیا اور ان کی فوری برطرفی کا مطالبہ کیا-

مزید پڑھیں: وزارتِ تعلیم یکساں نصابِ تعلیم کا نظام بنانے میں ناکام

مولانا جالندھری نے کہا کہ دینی معاملات کے بارے میں ایسی غیر ذمہ دارانہ گفتگو کرنے والے عناصر کو تعلیم جیسی اہم ترین وزارت سے ہر قیمت پر دور رکھا جانا چاہیے-

انہوں نے کہا اسلام کے نام پر معرض وجود میں آنے والی مملکت خداداد فکری طور پر اتنی بانجھ نہیں ہوئ کہ اس کی نسل نو کا ایمان اور مستقبل ایسے عناصر کے رحم وکرم پر چھوڑ دیا جائے۔

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *