ریاست ہائے متحدہ امریکہ کے بارے میں دلچسپ معلومات

ریاست ہائے متحدہ امریکہ (United States of America) جومختصرأ USA یا امریکہ“ کہلاتا ہے، براعظم شمالی امریکہ کے اندر بحراوقیانوس اور بحرالکاہل کے درمیان واقع ہے۔ اس کے شمال میں کینیڈا اور جنوب میں میکسیکو اور خلیج میکسیکو واقع ہیں ۔ اس کی ایک ریاست الاسکا کینیڈا کے شمال مغرب میں ہے اور ایک اور ریاست ہوائی بحرالکاہل کے وسط
میں واقع ہے۔ علاوہ ازیں جزیرہ پورٹو ریکو ( ویسٹ انڈیز) اور گوام وغیرہ جزیرے ( بحرا کاہل ) اس میں شامل ہیں ۔ اس کی آبادی تقریب 30 کروڑ ہے۔ یوں بلحاظ آبادی چین اور بھارت کے بعد امریکہ دنیا کا تیسرا بڑا ملک ہے۔ یہاں 80 فید سفید فام ، 13 فیصد سیاہ فام (افریقی نسل) اور 4 فیصد ایشیائی رہتے ہیں۔ مذہب کے لحاظ سے پروٹسٹنٹ عیسائی (61فیصد) ، رومن کیتھولک عیسائی (24 فیصد ) ، مورمن 2 فیصد اور یہودی 1.7 فیصد ہیں۔ علاوہ ازیں مسلمان 0.6 فیصد۔ بدھ 0.7 فیصد اور ہندو 0.4 فیصد ہیں ۔ دارالحکومت واشنگٹن ڈی سی ہے جس کی آبادی تقریبا 65 لاکھ ہے۔ نیویارک (80 لاکھ ) ، شکاگو (27 لاکھ )، لاس اینجلس (38لا کھ )، فلاڈلفیا (15.5 لاکھ )، بوسٹن ( سوا 6 لاکھ )، اٹلانٹا ( سواه 4 لاکھ) اور سان فرانسسکو ( سوا8 لاکھ) کے بڑے شہر ہیں۔
امریکہ کا قہ 9526468 مربع کلومیٹر ہے۔ یوں امریکہ رقبے کے لحاظ سے روس ، کینیڈا اور چین کے بعد دنیا کا چوتھا بڑا ملک ہے۔ 1788ء میں ریاست ہائے متحدہ امریکہ ( یو ایس اے) کی ابتدائی تیرہ ریاستوں کا کل رقبہ 888685 مربع میل (تقری23لاکھ مربع کلومیٹر) تھا، یعنی سعودی عرب سے بھی کچھ زیادہ۔
امریکہ میں دنیا کا تیسرا بڑا دریا مسوری میں، مسپی واقع ہے جو ریاست مونٹانا میں اپنے سر چشمے سے لے کر اپنے دہانے(خلیج میکسیکو) تک 3710 میل لمبا ہے۔ یہ دراصل دو دریا ہیں، مسپی جوشمال سے آتا ہے اور مسوری جوشمال مغرب سے 2540 میل کا فاصلہ طے کر کے سینٹ لوئیس شہر کے قریب دریائے مسپی سے آملتا ہے۔
جدید امریکی تاریخ کا آغاز 1524ء سے ہوا جب پہلی برطانوی کالونی جیمز ٹاون (ورجینیا) میں بسائی گئی ۔ 1624ء میں ڈچ قوم نے نیویارک کے علاقے میں نیونیدرلینڈ کے نام سے کالونی بسائی اور نیوایمسٹرڈم شہر آباد کیا جس پر 1664ء میں انگریزوں نے قبضہ کر کے اسے نیویارک کا نام دیا۔ 83-1776ء میں 13 امریکی ریاستوں نے برطانیہ کے خلاف جنگ کر کے آزادی حاصل کر لی اور جارج واشنگٹن امریکہ کا پہلا صدر بنا۔ 1814 ء میں برطانوی فوج نے حملہ کر کے
واشنگٹن ڈی سی میں ایوان صدر، کیپٹل اور دیگر عمارات جلا دیں۔ 1861ء میں سولھویں امریکی صدر جارج و اشنگٹن کے عہد میں غلامی کی حامی جنوبی ریاستوں نے بغاوت کر کے الگ ریاست بنالی، جو بڑی خونریزی کے بعد 1865ء میں ختم ہوئی۔ 99-1898ء کی امریکہ سپین جنگ میں امریکہ نے فلپائن، گوام اور پورٹوریکو ہتھیا لیے۔ پہلی جنگ عظیم (1914-18ء) اور دوسری جنگ عظیم (45-1939ء) میں اتحادیوں (برطانیہ، فرانس اور روس ) کا ساتھ دیا۔ 1950-53ء میں جنگ کوریا اور 75-1965 ء میں جنگ ویت نام ہوئی جن میں ایک لاکھ سے اوپر امریکی فوری مارے گئے ۔ 1991 اور 2003 میں عراق اور 2001 میں افغانستان پر حملے کیے۔

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *