محکمہ کالج ایجوکیشن سندھ کا 2 سالہ ڈگری پروگرام ختم کرنے کا فیصلہ

کراچی: () محکمہ تعلیم سندھ نے صوبےبھر کے کالجوں میں 2 سال ڈگری پروگرام ختم کرنے کا فیصلہ کر کے اجلاس طلب کرلیا ہے۔سندھ حکومت کی جانب سے سندھ میں 2 سال ڈگری پروگرام بی ای، بی ایس سی اور بی کام پروگرام ختم کرنے کی تیاریاں شروع ہوگئیں۔

تفصیلات کے مطابق حکومت سندھ نے سندھ ہائی کورٹ کے 18 مارچ 2021 کے ایک فیصلے پر عمل کرتے ہوئے اخبارات میں اشتہار جاری کیا ہے جس کے مطابق 2 سالہ ڈگری پروگرام غیر مستند ہوگا اور صوبے بھر کے انٹرمیڈیٹ پاس طلبا وطالبات کو 2سالہ گریجویشن اور ڈگری ہولڈر طلبہ کو دو سالہ ماسٹرز پروگرام میں داخلوں سے روک دیا گیاہے۔ عدالتی حکم پر سندھ کے

مزید پڑھیں: سندھ ، محکمہ تعلیم کی ورکنگ کمیٹی کا پیر (آج)سے 50 فیصد حاضری کیساتھ اسکول کھولنے کا فیصلہ

پہلے مرحلے میں327 سرکاری کالجوں میں سے 29 کالیجوں سے دو سال ڈگری پروگرام ختم کیا جائے گا۔ صوبے میں دو سال ڈگری پروگرام ختم کرنے والے طلبہ کو بی ایس ڈگری میں منتقل کرنے کی تیاریاں جاری ۔ اب انٹر پاس طلبہ گریجویشن کے لیے الحاق شدہ کالجوں میں 4 سالہ بی ایس پروگرام میں داخلے حاصل کرسکتے ہیں۔

حکومت سندھ کے مطابق دو سالہ گریجویشن ختم ہونے کے بعد اب وہ کالجوں میں یا تو چار سالہ بی ایس پروگرام میں داخلہ لیں یا پھر دو سالہ ایسوسی ایٹ ڈگری پروگرام میں داخل ہوں جس کے لیے سیمسٹر سسٹم ہونا ضروری ہے۔

مزید پڑھیں: تصوف سے روشناہی

چار سال بی ایس پروگرام کےلئے کراچی ، حیدرآباد ، سکھر گھوٹکی سہیون ٹنڈو محمد خان بدین ٹھٹھہ اور دیگر شھروں کے کالیجوں کو تجویز کیا گیا ہے۔ اجلاس میں پہلے مرحلے میں 29 کالجوں میں 4 سالہ پروگرام شروع کرنے کو حتمی شکل دی جائے گی۔ دیگر اضلاع کے کالجوں میں 4 سالہ ڈگری پروگرام جلد شروع کیا جائے گا۔

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *