اساتذہ پر تشدد قابل مذمت،ایلمنٹری ایجوکیشن فاؤنڈیشن پرائیویٹ پارٹنراسکولز کی ادائیگیاں کرے،حافظ یعقوب

دیر لوئر : ڈپٹی جنرل سیکرٹری جماعت اسلامی ضلع دیر پائین انجینئر حافظ یعقوب الرحمن نے پشاور میں اقراء واوچرز سکیم کے پرائیویٹ اسکولز سربراہان اور اساتذہ پر پولیس تشدد اور گرفتاریوں کی مذمت کرتے ہوئے مطالبہ کیا ہے کہ گرفتار اساتذہ کو فوری رہا اور ان کی واجبات کو فوری ادا کیا جائے۔

انہوں نے کہا کہ 2018 میں صوبائی حکومت نے اقراء واؤچرز سکیم شروع کیا تھا اس سکیم کے تحت آؤٹ آف سکولز بچوں کو سکولز میں داخل کرانے کے لئے حکومت اور پارٹنر سکولز کا 500 روپے ماہانہ فیس فی طالب علم پر معاہدہ ہوا تھا اس معاہدے کے تحت 1000 تک حکومت کے پرائیویٹ پارٹنر سکولز نے ایک لاکھ بچے داخل کرائیے تھے ۔

صوبائی حکومت کو ماہانہ فیس/ یونیفارم اور بکس کی رقم کی ادائیگی باقاعدگی سے کرانا ضروری تھا لیکن افسوس کہ 2018 سے مسلسل ان پارٹنر /واؤچرز سکولز کو دھوکے میں رکھا جارہا ہے اور حکومت باقاعدگی سے ان سکولز کو ادائیگی نہیں کررہی۔۔ جس سے یہ کم فیس والے اسکولز مالی مشکلات کا شکار ہیں ۔ درج بالا اداروں کے حکومت پر دو تین سال کی فیس کتابوں/ یونیفارم کی مد میں کچھ رقم بقایا ہے۔

انجینئر یعقوب الرحمن کا کہنا تھا کہ رقم کی ادائیگی کیلئے اسکولز سربراہان اور اساتذہ مجبور ہوکر صوبائی اسمبلی کے سامنے پرامن احتجاج کیلئے جمع ہوئے جس پر پولیس نے ان پر ڈنڈے اور لاٹھیاں برسائیں اور 150 تک اساتذہ کو گرفتار کیا۔ ہونا تو یہ چاہیے تھا کہ وزیر اعلی صاحب خود نکلتے اور ان کے مطالبات حل کرتے اور واجبات ادایگی کا حکم دیتے لیکن افسوس کہ صوبائی حکومت اسکولوں کو ادایگی کرنے میں ٹال مٹول سے کام لے رہی ہے ۔

انہوں نے کہا کہ ایک طرف حکومت کریڈٹ لے رہی ہے کہ ہم نے اتنے لاکھ بچوں کو اسکولز میں داخل کرایا تو دوسری طرف پرائیویٹ پارٹنر اسکولز کے ساتھ اس ظلم کا ارتکاب کررہی ہے۔
انہوں نے مطالبہ کیا کہ گرفتار اساتذہ کو فوری رہا کیا جائے اور ان پارٹنر سکولز کو بقایا جات فوری طور پر ادا کی جائے۔

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *