عدلیہ کی حمایت کے بغیر قوانین پرعمل درامد کروانا مشکل ہوگا، بیرسٹرمرتضٰی وہاب

کراچی ( ) ایڈمنسٹریٹر کراچی اورصوبائی مشیربرائے قانون بیرسٹرمرتضٰی وہاب نے کہاکہ حکومت سندھ نے کم عرصے میں پولیسنگ، جیل اصلاحات اور منشیات کے حوالے سے متعدد قانون سازیاں کی ہے مگرعدلیہ کی حمایت کے بغیر اب قوانین پرعمل درامد کروانا مشکل ہوگا۔

وہ جرمن ادارے ایف ای ایس اور پاک انسٹیوٹ اف پیس اسٹڈیز کے تحت کراچی میں دہشت گردی اورنیشنل ایکشن پلان کے موضوعات پر دو رپورٹوں کے اجرا کے حوالے سے منعقد تقریب سے خطاب کررہے تھے۔

پاکستان پیپلزپارٹی کے سینیٹر تاج حید رنے کہا کہ دہشت گرد تنظیمیں ہمیشہ سے معاشرے کے پسے ہوئے طبقات میں اپنی حمایت ڈھوندتی ہے۔ سیاسی ملکیت کے بغیردہشت گردی کے خلاف کوئی بھی مہم کامیاب نہیں ہوسکتی،

مزید پڑھیں: کورنگی مہران ٹاؤن فیکٹری حادثہ ، SBCA کے 3 ملازمین کو معطل

انہوں نے کہا کہ نیشنل ایکشن پلان کے نفاز کویقینی بنانے والے ادارے نیکٹا کوکمزورکردیا گیاہے۔
متحدہ قومی موومنٹ پاکستان کی رکن سندھ اسمبلی منگلا شرما نے کہاکہ افغانستان میں رونماہونے والی تبدیلی کے پاکستانی کی سلامتی کو لاحق ممکنہ خطرات کو نمنٹنے کے لئے پاکستان کواہم اقدامات اٹھانے پڑیں گے۔

سندھ پبلک سیفٹی و پولیس کمپلینٹ کمیشن کے رکن کرامت علی نے کہاکہ حکومت سندھ پبلک سیفٹٰ کمیشن و پولیس کمپلینٹ کمیشن کوفعال ادارہ بنانے میں دلچسپی کااظہار نہیں کررہی ہے اورگیارہ ماہ سے کمیشن کا ایک اجلاس بھی منعقد نہیں ہوسکا۔

تقریب سے، سی پی ایل سی کے سربراہ زیبرحبیب کراچی اپریشن کے بعد شہر میں امن اورسرمایہ کاروں کا اعتماد بحال ہواہے۔ ہیومن رائٹس کمیشن اف پاکستان کے شریک چیئرمین اسد اقبال بٹ نے کہاکہ انسانی حقوق کے اصولوں کا خیال رکھتے ہوئے شہریوں کی مال وجان کی حفاظت حکومت کی زمہ داری ہوتی ہے۔

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *