بنیادی شہری حقوق بحیثیت پاکستانی شہری

حق زندگی:

حق زندگی جس کے بغیر دوسرے حقوق کا تصور بھی نہیں کیا جا سکتا.بنیادی شہری حقوق ہر انسان کو زندہ رہنے اور اپنی مرضی کے مطابق زندگی گزارنے کا پورا حق ہے .اور کسی کو بھی اس حق سے محروم نہیں رہنا چاہیے

مرد یا عورت کی زندگی کو صحت کی سہولیات میسر نہ ہونے کی بنیاد پر خطرہ لاحق نہیں ہونا چاہیے

اس لیے کسی بھی بچے کی زندگی کو لڑکا یا لڑکی ہونے کی بنیاد پر خطرہ لاحق نہیں ہونا چاہیے

سب سے بڑھ کر یہ کہ نوزائیدہ بیٹیوں کی زندگی قتل کے خطرے سے پاک ہونا ضروری ہے

حق خاندان:

ہر مردو عورت کو آزادانہ سوچ اپنی مرضی سے اپنا جیون ساتھی کے انتخاب اور خاندانی زندگی کے بارے میں فیصلہ کرنے کا پورا حق ہے.تمام مرد و .عورت یہ فیصلہ کرنے کا حق رکھتے ہیں.. کہا نہوں نے اپنے خاندان کے لئے کب اور کتنے بچے پیدا کرنے ہیں

حق تعلیم:

تعلیم ہر فرد کا بنیادی حق اور ترقی کا پہلا زینہ ہے_
ہر شہری خواہ مرد ہو یا عورت یہ اس کا حق ہے وہ اپنی پسند اور خواہش کے مطابق تعلیم حاصل کرے
.اس سلسلے میں ریاست اور والدین کا فرض ہے. کہ وہ تمام بچے اور بچیوں کو یکساں طور پر ان کی ضروریات کے مطابق تعلیم کی سہولیات فراہم کرے_

حق مذہب:

ہر شہرہ خواہ کسی بھی مذہب اور مسلک سے تعلق رکھتا ہو .اپنی مذہبی رسرسومات پوری آزادی اور حفاظت کے ساتھ اپنی عبادت گاہ ہوں میں ادا کرنے کا حق .رکھتا ہے.پاکستان کے آئین کے تحت تمام افراد کو مذہبی آزادی حاصل ہے

حق رہائش:

تمام مردو خواتین شہریوں کو یہ حق حاصل ہے کہ وہ اپنے ملک کے جس حصے میں رہنا چاہیں رہائش اختیار کر سکتے ہیں اور تمام مردو خواتین کو جائیداد کے حوالے سے خریدوفروخت کا حق حاصل ہے_

حق جائیداد:

بنیادی شہری حقوق بحیثیت پاکستانی شہری ہر مرد اور عورت کو یہ حق حاصل ہے .کہ وہ ذاتی جائیداد بنائے . اسے جیسے چاہے خرچ کرےخواتین کا جائیداد اور دیگر تر کہ میں بطور بیٹی،بیوی اور بنیادی شہری حقوق بحیثیت پاکستانی شہریماں کے حصہ دار ہوتی ہے . اس کے بارے میں اس کو علم ہونا چاہیے.خواتین کا بھی اپنے والدین کی جائیداد میں حصہ ہوتا ہے.اس کے بارے میں ان کو علم ہونا چاہیے . ان کو اس وراثتی حق سے محروم کرنا قانوناً جرم ہے_

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *