اداکار عثمان مختار کا ڈائریکٹر پر ہراساں کرنے کا الزام، خاتون خود سامنے آگئیں

عثمان مختار

لاہور؛ اداکار عثمان مختار کو مبینہ طور پر ہراساں کرنے والی خاتون منظر عام پر آگئیں۔

تفصیلات کے مطابق اداکار عثمان مختار نے فوٹوشیئرنگ ایپ انسٹاگرام پر ایک خاتون ڈائریکٹر پر ہراسانی اور بلیک میلنگ کا الزام عائد کرتے ہوئے کہا کہ میرےاہل خانہ اور دوست ہراسانی اور بدنام تبصروں کا نشانہ بن رہے ہیں جس سے میری ذہنی صحت متاثر ہوئی لیکن میں خاموش رہا اور ایف آئی اے حکام کو اس سے نمٹنے کا موقع دیا لیکن اب میں تھک گیا ہوں۔

اداکار عثمان مختار کی جانب سے الزامات کے بعد مہروز وسیم نامی خاتون نے سوشل میڈیا پر ایف آئی اے کو دیا جانے والے بیان پوسٹ کیا اور اس کے ساتھ لکھا یہ میرا ایف آئی اے کو دیا گیا ذاتی بیان ہے۔

خاتون کے شیئر کردہ پوسٹ کے مطابق میں نے جولائی 2016 کو مسٹر عثمان مختار کو میرے گانے ’’آزاد‘‘ کی میوزک ویڈیو کی ہدایات دینے کے لیے کاسٹ کیا، تاہم اس دوران اداکار کا رویہ نہایت غیرپیشہ ورانہ تھا، وہ ہمیشہ آن لائن بات چیت کے دوران اپنی ذاتی زندگی کے متعلق باتیں کیا کرتے تھے اور میوزک ویڈیو کے پراجیکٹ سے متعلق کوئی بات نہیں کرتے تھے۔

خاتون نے مزید کہا کہ اداکار عثمان مختار نے وعدہ کیا تھا کہ وہ ویڈیو پراجیکٹ سے متعلق تحریری طور پر لکھ کر دیں گے لیکن ایسا کبھی نہیں ہوا، جب عثمان نے میری کسی بھی طرح کی بات ماننے سے انکار کردیا تو ویڈیو سے متعلق سارا کام میں نے خود کیا۔

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *