نجی تعلیمی اداروں کے مسائل پر ڈاکٹر منسوب حسین صدیقی کا قابل ستائش اقدام

کراچی: گرینڈ الائنس آف پرائیویٹ اسکولز ایسوسی ایشنز سندھ کی نمائندہ وفد نے کنوینر علیم قریشی کی سربراہی میں نجی تعلیمی اداروں کے مسائل اور ان کے حل کی کوشش کے لیے ڈی جی ڈائریکٹوریٹ آف انسپیکشن اینڈ رجسٹریشن آف پرائیویٹ انسٹیٹیوشنز سندھ محترم جناب ڈاکٹر منصوب احمد صدیقی اور محترمہ رفیعہ جاوید سے ملاقات کی۔

ملاقات میں گرینڈ الائنس آف پرائویٹ اسکولز ایسوسی ایشنز سندھ کے مرکزی رہنماؤں شہزاد اختر، طارق شاہ، دوست محمد دانش، دانش الزمان، اختر آرائیں، اور آصف خان نے شرکت کی۔

مزید پڑھیں: کشمیر الیکشن میں کونسے SOPs فالو ہورہے ہیں، پرائیویٹ اسکولز ایکشن کمیٹی

اس موقع پر ، پرائیویٹ اسکولز کی موجودہ صورتحال پر گرینڈ الائنس آف پرائیویٹ اسکولز ایسوسی ایشنزسندھ کی جانب سے پیش کردہ چارٹر آف ڈیمانڈ پر تفصیلی گفتگو ہوئی۔

ڈاکٹر منسوب حسین صدیقی اور محترمہ رفیعہ جاوید نے پرائویٹ اسکولز اور کالجز کے مسائل سے مکمل اتفاق کرتے ہوئے کہا کہ گزشتہ دو سال سے پرائیویٹ تعلیمی اداروں کو کووڈ کی وجہ سے بہت سی مشکلات کا سامنا کرنا پڑا جبکہ بچوں کا تعلیمی نقصان بھی بہت زیادہ ہوا ہے لیکن ویکسی نیشن اور صورتحال میں بہتری کے بعد ایس و پیز پر عملدرآمد سے امید ہے کہ تعلیمی عمل میں تسلسل پیدا ہو گا اور اسٹیرنگ کمیٹی کے فیصلے کے مطابق دو اگست سے نئے تعلیمی سال کا آغاز ہو سکے گا ۔

مزید پڑھیں: تعلیمی اداروں کو آئے روز بند کرنا تعلیم دشمن پالیسی ہے، دانش الزماں

ڈاکٹر منسوب حسین صدیقی نے گرینڈ الائنس آف پرائیویٹ اسکولز ایسوسی ایشنز سندھ کی درخواست پر چارٹر آف ڈیمانڈ کے ساتھ سیکریٹری تعلیم کو پرائیویٹ اسکولز کے مسائل کے حل کے لیے فوری طور پر خط بھی لکھا جس پر پرائیویٹ اسکولز کے نمائندوں نے ڈی جی پرائویٹ انسٹیٹیوشنز اور رجسٹرار پرائویٹ انسٹیٹیوشنز کا شکریہ ادا کیا اور کہا کہ سندھ بھر میں پرائیویٹ تعلیمی ادارے تعلیمی ترقی میں اپنا کردار ادا کرتے رہیں گے لیکن اس کے لیے حکومت سندھ کو نجی تعلیمی اداروں کے مسائل کا عملی طور پر احساس کرنا ہوگا۔

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *