تعلیمی اداروں کو آئے روز بند کرنا تعلیم دشمن پالیسی ہے، دانش الزماں

کراچی : چیئرمین پرائیویٹ اسکولز مینجمنٹ ایسو سی ایشن دانش الزماں نے کہا ہے کہ سندھ حکومت کی جانب سے تعلیمی اداروں کو آئے روز کرونا وباء کی بگڑتی صورتحال پر بند کرنے کا فیصلہ انتہائی افسوس ناک اور تعلیم دشمن عمل ہے ۔ جبکہ تعلیمی ادارا وہ واحد شعبہ ہے جہاں پر مکمل ایس او پیز پر عمل درآمد کرایا جارہا ہے – دیگر شعبوں کی غفلت اور حکومتی غیر ذمیداری کا خمیازہ لاکھوں طالب علموں کو کب تک بھگتنا پڑے گا –

انہوں نے کہا ہے کہ سندھ حکومت کے آج کے جاری کردہ اعلان کے مطابق شاپنگ مال اور مارکیٹیں صبح چھ سے شام چھ بجے تک کھلی رہیں گی – جب کہ تعلیمی اداروں کو تاحکم ثانی بند کر دیا گیا ہے – حکومت سندھ تعلیم کو ترجیح دے شاپنگ مال اور مارکیٹ کھول کر اس بات کا واضح ثبوت دے دیا گیا کی تعلیم کو ترجیحات میں شامل ہی نہیں کیا جا رہا ہے یہ بات عقل سے بالاتر ہے – اسکولوں کا دورانیہ عام طور پر پانچ گھنٹے پر مشتمل ہوتا ہے جبکہ کرونا وبا کے دوران یہ دورانیہ 4 گھنٹوں پر رہ گیا ہے اس میں بھی 50 فیصد حاضری کے ساتھ متبادل دنوں پر طالب علموں کو بلایا جاتا ہے۔ اور انتہائی غور طلب بات تو یہ ہے کہ نجی تعلیمی اداروں میں اساتذہ کرام اور تمام تر عملہ کثیر تعداد میں ویکسینیٹ ہو چکا ہے ۔

ان کا کہنا تھا کہ حکومت سندھ تا حکم ثانی تعلیمی اداروں کو بند کرنے کا فیصلہ لاکھوں طالب علموں کے بہترین مفاد میں واپس لے- یہ بات واضح رہے کہ حکومت سندھ اپنے اس فیصلے سے لاکھوں طالبعلموں کا تیسرا تعلیمی سال بھی داؤ پر لگانے کو ہے- فوری طور پر تعلیمی اداروں کو بھی مارکیٹ اور شاپنگ مالز کی طرح محدود اوقات میں تعلیمی سرگرمیاں بحال رکھنے کی اجازت دی جائے۔ حکومت سندھ اسٹیرنگ کمیٹی کے فیصلے کے مطابق 2 اگست سے نیا تعلیمی سال شروع کرنے کا نوٹیفکیشن جاری کرے – اس وباءکی روک تھام میں نجی اسکول منتظمین اور اساتذہ برادری شانہ بشانہ ہر محاذ پر آپ کے ساتھ ہیں۔ حکومت لاکھوں طالب علموں کے مستقبل اور تعلیمی اداروں سے متعلق غیر سنجیدہ رویہ بدلے –

چیئرمین پرائیویٹ اسکولز مینجمنٹ ایسو سی ایشن دانش الزماں نے کہا کہ لاکھوں طالب علموں کے بہترین مفاد میں پسماء کی جانب سے “تعلیم کو ترجیح دو” مہم کا آغاز سندھ بھر میں شروع کیا جا رہا ہے۔ جس کی مثال اسکول کے آخری روز سندھ بھر کے طالبعلموں اور اساتذہ نے یوم سیاہ منا کے دی ہے۔

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *