افغانستان کے سفارتی عملے کو واپس بلانے کا فیصلہ بدقسمتی و افسوس ناک ہے، دفتر خارجہ

دفتر خارجہ اور کلبھوشن یادیو

اسلام آباد: افغان حکومت کی جانب سے سفارتی عملے کو  واپس بلائے جانے پر پاکستان نے رد عمل دیتے ہوئے کہا کہ افغان حکومت کا سفیر اور سفارتی عملے کو واپس بلانے کا فیصلہ بدقسمتی اور افسوس ناک ہے۔

خیال رہے کہ ایک روز قبل افغان سفیر کی بیٹی کے اغوا کا معاملہ سامنے آیا تھا، جس کے بعد کابل نے اپنے سفیر کو اسلام آباد سے واپس بلالیا تھا۔

اس پر دفتر خارجہ کی جانب سے ردِ عمل سامنے آیا اور دفتر خارجہ کے ترجمان زاہد حفیظ چوہدری نے کہا کہ افغان سفیر کی بیٹی کے اسلام آباد میں مبینہ اغوا کی تحقیقات جاری ہیں۔

مزید پڑھیے: افغان سفیر بیٹی کیس: افغانستان تحقیقات سے بھاگ گیا، سفیر واپس بلا لیا

دفتر خارجہ کا کہنا تھا کہ وزیرِاعظم کی ہدایت پر معاملے کی تحقیقات اعلیٰ سطح پر ہو رہی ہیں۔

دوسری جانب وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا کہ افغان سفیر کو اچانک بلانے پر تشویش ہوئی ہے، افغان سفیر یہیں رہیں اور تحقیقات میں تعاون کریں۔

اپنے بیان میں وزیرِ خارجہ شاہ محمود قریشی نے افغان قیادت کو مشورہ دیتے ہوئے کہا کہ افغانستان کو اپنے فیصلے پر نظر ثانی کرنی چاہیے۔

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *