کراچی پولیس کو مطلوب ملزمان کو حیدرآباد پولیس کی پشت پناہی حاصل، جوئے کے اڈوں کا انکشاف

حیدرآباد: () کراچی کے تھانوں سے مفرور بدنام زمانہ جواریوں نے حیدرآباد کے تھانے فورڈ کی حدود میں ڈیرے ڈال دئیے، متعلقہ پولیس کی سرپرستی میں یومیہ لاکھوں روپوں کا جواء کھیلا جانے لگا۔

مقامی سرغنہ داؤد عرف پٹھان نے کراچی کے تھانوں سے مفرور جواری ساجد عرف کالا کو جواء سٹے کے لئے حیدرآباد اسٹیشن کے قریب ریلوے لائن کے ساتھ ہوٹل والی گلی میں جگہ دے رکھی ہے، جہاں پر ساجد عرف کالا اپنے چار پارٹنرز اسلم عرف جگنو، کامران پپی، بلال اوڈ اور ظفری نامی شخص کے زریعے مانگ پتہ، رمی، گھوڑی، چرخی اور چھکے پر یومیہ لاکھوں روپوں کا جواء سٹہ کھیلا جا رہا ہے۔

مزید پڑھیں: نادیہ شاہین پولیس جرائم کے خاتمے کیلئے کوشاں

حیدرآباد کے معتبر ذرائع نے بتایا ہے کہ بدنام زمانہ جواری ساجد عرف کالا کراچی رینج کے تین تھانوں جن میں پی آئی بی، پاک کالونی اور پریڈی پولیس کو منشیات اور چیک باونس کے مقدمات میں مطلوب ہے۔

ذرائع کے مطابق ماضی میں ساجد عرف کالا اپنے دست راز اسلم عرف جگنو اور کامران عرف پپی ظفری اور بلال اوڈ کے ساتھ کراچی کے چار اضلاع ملیر، ایسٹ، سینٹرل اور ویسٹ کے تھانوں کی حدود میں کراچی کے سب بڑے جوئے سٹے کے اڈے قائم کرنے کے ساتھ منشیات فروشی میں بھی ملوث رہا ہے،

مزید پڑھیں: حیدر آباد تھانہ کی حدود میں جرائم معمول بن گئے

کراچی رینج پولیس کے نئے چیف کی تعیناتی ہوتے ہی ساجد عرف کالا اور اسلم عرف جگنو نے حیدرآباد کے تھانے فورڈ پولیس اسٹیشن میں مکروہ دھندہ پولیس کی آشیرباد ایک بار پھر سے شروع کردیئے،،،،

واضح رہے کہ ساجد عرف کالا کراچی پولیس کو مطلوب ہونے کے باوجود پولیس کی ایما پر حیدرآباد میں جواء سٹے کا اڈا چلا رہا ہے، جوکہ سندھ پولیس کے لئے سوالیہ نشان ہے۔

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *