اونٹ کا انتقام

تحریر: الیاس بابر محمد

اونٹ کے مشہور انتقام کے حوالے سے عربوں میں ایک کہانی سنائی جاتی ہے ، کہتے ہیں ” ایک اونٹ کے مالک نے ایک دن ناراض ہو کر اپنے اونٹ کو سخت مضروب کیا ، وہ شخص اونٹ کی انتقامی جبلت سے آگاہ تو تھا ہی لہٰذا چند دنوں میں اس نے وہ اونٹ دوسرے قبیلے کے شخص کو فروحت کر دیا –

اونٹ کو فروحت کرنے کے بعد اس شخص کی زندگی معمول کے مطابق گزرنا شروع ہو گئی اور اونٹ ایک قبیلے سے دوسرے قبیلے اور آگے بکتا رہا ، یوں دس سال بیت گے –

ایک دفعہ دوران سفر اُس شخص کا گزر جس نے سالوں پہلے اونٹ فروحت کر دیا تھا ایک قبیلے کے پاس سے ہوا جہاں وہ رات گزاری کے لئے رک گیا ، قبیلے والوں نے اُس کا اکرام کیا اور اسے اپنے ہاں لے گے جہاں اُس نے وہ اونٹ دیکھا جو اب بوڑھا ہو چکا تھا جسے اس نے سالوں پہلے مضروب کرنے کے بعد اسکے انتقام کے خوف سے فروحت کر دیا تھا ، بوڑھے اونٹ نے اپنے سابق مالک کو بھی دیکھ لیا تھا لہٰذا دونوں کے دِلوں میں گزرے زمانے کی یادیں اور درد تازہ ہو گے –

مزید پڑھیں: اگر آپ صحت مند ہیں تو اللہ کا ہر لمحہ شکر ادا کریں

قبیلے کے لوگوں نے اِس شخص جو کہ انکے ہاں مہمان تھا کو ایک الگ خیمے میں ٹھہرایا ، جیسے ہی رات شروع ہوئی اس شخص کے دل میں ایک بار پھر اونٹ کے انتقام کا خوف پیدا ہونے لگا اور اپنی موت یقینی نظر آنے لگی ، ایسے میں اسے کوئی اور تدبیر تو نہ سوجھی مگر اس نے اپنے کپڑے اتار کر ان میں گھاس پھوس اور پتھر بھر کر ان کا پُتلا بنایا اور اپنی جگہ پر لٹا دیا اور الف ننگا ہی خیمے سے نکل کر باہر اندھیرے میں بیٹھ گیا ، ابھی کچھ دیر ہی گزر تھی کہ اونٹ کہیں سے آ نکلا اور اپنے پاؤں سے خیمے کو روندنا شروع کر دیا اور اتنی دیر تک یہ عمل کرتا رہا جتنی دیر تک اُسے اپنے پرانے مالک کی موت کا یقین نہ ہو گیا-

الف ننگے شخص نے کسی نہ کسی طرح اسی رات وہاں سے بھاگ جانا مینج کر لیا – وقت یوں ہی گزرتا رہا اور ایک عرصے بعد اونٹ کا اپنے سابق مالک کے ساتھ ایک شہر میں جہاں وہ سامان اتارنے آیا تھا آمنا سامنا ہو گیا ، اونٹ غم ، دکھ ، شرمندگی اور اذیت سے نِڈھال ہو کر گِر پڑا اور اِیڑیاں رَگڑ رَگڑ کر جان دے دی ” –

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *