صحافیوں کے بچوں کو PPSA کے ممبراسکولوں میں مفت تعلیم دی جائے گی ،

الرٹ نیوز

نجی اسکولوں اورتعلیم کی بہتری کے لئے پاکستان پرائیوٹ اسکول ایسو سی ایشن کا قیام عمل میں آگیا ہے،کراچی بھر کے 400کے قریب نجی اسکولوں نے ایسوسی ایشن کی ممبر شب لے لی ہے،ایسوسی ایشن کے ممبرز اسکولوں میں تنخواہوں کے مسائل کا شکار صحافیوں کے بچوں کو مفت تعلیم دی جائے گی.

ایسوسی ایشن کے تحت 20 دسمبر کوآرٹس کونسل میں نجی اسکول کے میٹرک کے پوزیشن ہولڈرز طلبہ میں شیلڈ کی تقسیم کی جائے گی جبکہ اسکولوں کے سربراہان کو ممبر شپ سرٹیفکیٹ اور نئے عہدیداران کی حلف برداری تقریب بھی ہوگی ، نجی تعلیمی اداروں میں زیر تعلیم طلباء کیلئے کیرئیر کونسلنگ شروع کرنے کے عزم کا اعادہ بھی کیا گیا ہے۔

نجی اسکولوں کی تنظیم پاکستان پرائیوٹ اسکول ایسو سی ایشن نے ایسوسی ایشن کے قیام کا اعلان بدھ کو کراچی کے مقامی ہوٹل میں منعقدہ تقریب میں کیا۔ اس تقریب میں پاکستان پرائیوٹ اسکول ایسوسی ایشن (پی پی ایس اے) کے سرپرست اعلیٰ قاضی نورالسلام شمس، چیئرمین پرویز ہارون، جنرل سیکریٹری انجینئر عبدالرحمن، فنانس سیکریٹری ساجد حسین، سینئر جوائنٹ سیکریٹری عابد حسین اور پریس سیکریٹری مغفور نجیب بھی موجود تھے۔

چیئرمین پاکستان پرائیوٹ اسکول ایسو سی ایشن پرویز ہارون نے تنظیم کے مقاصد بیان کرتے ہوئے کہنا تھا کہ ہمارا مقصد بین الصوبائی فاصلہ دور کرنا ہے اور دیگر صوبوں کے نجی تعلیمی اداروں کے درمیان روابط قائم کرنا ہے۔ انہوں نے کہا کہ جنوری کے پہلے ہفتے میں لاہور اور جنوری کے آخری ہفتے میں پشاور سمیت پاکستان کے دیگر علاقوں میں ممبر سازی کا عمل شروع کردیں گے۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ 20 دسمبر کو آرٹس کونسل میں نجی اسکولوں کے میٹرک کے پوزیشن ہولڈرز طلبہ کے اعزاز میں تقریب کا اہتمام کیا گیا ہے جس میں طلبہ کو شیلڈ دی جائیگی، ممبر اسکولوں کے سربراہان کو ممبر شپ سرٹیفکیٹ تقسیم کئے جائیں گے اور نئے عہدیداران کی حلف بردری بھی منعقد کی جائے گی۔

پرویز ہارون نے میڈیا نمائندوں کے سوالا ت کا جواب دیتے ہوئے کہا کہ امن ٹیک اور دیگر فنی اداروں کے ذریعہ طلبہ کی کیئر کونسلنگ کا اہتمام کیا جائے گا تاکہ طلبہ کو اپنی پیشہ ورانہ زندگی میں مشکلات پیش نہ آئیں اور دیگر اداروں کے ذریعہ اْن کی کونسلنگ بھی کریں گے۔

پاکستان پرائیویٹ اسکول ایسوسی ایشن نے صحافیوں کے اعزاز میں ریجنٹ ہوٹل میں ہائی ٹی کا اعزازیہ دیا

ان کا مزید کہنا تھا کہ بچوں کو معیاری اور بہتر تعلیم دینا ہمارا اولین مقصد ہے تاکہ وہ معاشرے کے مفید فرد بن کر پاکستان کا نام روشن کریں۔ سیکریٹری جنرل انجینئر عبدالرحمن کا کہنا تھا کہ گذشتہ ایک ماہ میں ہمارے 375نجی اسکول ممبر شپ حاصل کرچکے ہیں اور یہ رفتار مزید تیز ہوگی۔ ہم پورے پاکستان میں ممبر شپ کرنے جا رہے ہیں۔

ادھر پرویز ہارون کا یہ بھی کہنا تھا کہ اس سے قبل بھی قواعد کے مطابق اکثر اسکول دس فیصد ضرورت مند طلبہ کو مفت تعلیم فراہم کرتے ہیں اور ہم نے ادارہ کیا ہے کہ ہم تنخواہوں کے مسائل سے دوچار صحافیوں کے بچوں کو مفت تعلیم دیں گے تاکہ کسی نہ کسی طور ہم بھی صحافیوں کی اس مشکل گھڑی میں ان کے ساتھ کھڑے ہونگے اور ہمیں خوشی ہو گی کہ صحافی برادری ہمارے مسائل کو اجاگر کرے اور ہماری کم و کوہتایوں کی نشاندہی کرے تاکہ ہم تعلیم اور تعلیمی اداروں کی بہتری کرسکیں۔

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *