تحریک انصاف سندھ کے ناراض MNA اور MPA تبدیلی کی تیاری کرنے لگے ،

الرٹ نیوز

تحریک انصاف سندھ حکومت کو گرانے کی کوشش میں اپنا گروپ بنوا بیٹھی ہے ، تحریک انصاف کے7 ایم این ایز اور12 ایم پی ایز نے ناراض ہو کر الگ گروپ بنا لیا ہے اس حوالے سے متعدد مشاورتی اجلاس بھی ہو چکے ہیں ، تحریک انصاف میں گزشتہ کئی عرصہ سے گروپنگ جاری ہے ،تاہم اب پی ٹی آئی سندھ کے19 ارکان کے ناراض ہونے کی وجہ سامنے آئی ہے کہ ناراض ارکان وفاقی وزیر علی زیدی کی بے ضابطگیوں کی تفصیل وزیراعظم کودینا چاہتے تھے، لیکن علی زیدی نے وزیراعظم سے ملاقات ہی نہیں ہونے دی،بلکہ محمود مولوی کی ملاقات کروا دی۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق پی ٹی آئی سندھ کے متعدد ارکان قومی و صوبائی اسمبلی پارٹی قیادت سے ناراض ہوگئے ہیں ۔ ناراض ارکان نے اسمبلیوں میں حکومت کے خلاف مشترکہ لائحہ عمل اختیارکرنے پرغور شروع کردیا ہے ۔ بتایا گیا ہے کہ ناراض ارکان میں 7 قومی اسمبلی کے ارکان شامل ہیں ، جن میں کورنگی سے فہیم خان ، احسن آباد سے آفتاب جہانگیر، منگھوپیرسے عطاء اللہ خان ، ناظم آباد سے اسلم خان ، لیاری سے شکور شاد ، کیماڑی کے رہائشی NA-237 سے جمیل احمد خان اور اکرم چیمہ شامل ہیں۔

اس کے علاوہ ناراض ارکان میں سندھ اسمبلی سے 12 ایم پی ایز بھی شامل ہیں ۔ ناراض قومی و صوبائی اسمبلی ارکان کو وزیراعظم تک رسائی نہ ہونے کی شکایت تھی ۔ انہوں نے کہا کہ مراد سعید اوروزیراعظم کے قریبی رفقاء کے ذریعے ملاقات کیلئے کوشش کرچکے ہیں۔ لیکن وزیراعظم ہم سے ملنا ہی نہیں چاہتے۔

ارکان نے بتایا کہ کابینہ میں کراچی کے دونوں وزراء علی زیدی اور فیصل واوڈا ہمارے نمائندے نہیں ہیں ۔ کراچی ڈیفنس فیز 6 کے رہائشی اور NA-244 سے منتخب علی زیدی نے ایم این اے جمیل احمد خان کو پارلیمانی سیکرٹری کےعہدے سے ہٹوا دیا ہے ۔ جمیل احمد خان کی جگہ ڈیفنس فیز ون کے رہائشی اورNA-252 سے منتخب ممبر قومی اسمبلی آفتاب صدیقی کو پارلیمانی سیکرٹری میری ٹائم افیئرز لگا دیا گیا ہے . اسی طرح علی زیدی نے ایم ایم گروپ آف کمپنیز کے مالک محمود باقی مولوی کو پاکستان شپنگ کارپوریشن کا چیئرمین لگانا چاہتے ہیں ۔ معلوم ہوا ہے کہ جمیل احمد وفاقی وزیرعلی زیدی کی بے ضابطگیوں کی تفصیل وزیراعظم کودینا چاہتے ہیں۔

ناراض ارکان نے بتایا کہ علی زیدی نے وزیراعظم سے محمود مولوی کی ملاقات کروا دی مگرہم ملاقات نہیں کرسکتے۔ انہوں نے کہا کہ پہلے اسمبلیوں کے اجلاس کا بائیکاٹ کرینگے اور پھراستعفے دینگے۔اس کے علاوہ بھی تحریک انصاف کے ہارنے والے امیداروں کا ایک تگڑا گروپ موجود ہے جن کو راضی کرنے کے لئے بلدیاتی سیٹ اپ میں انہیں ایڈجسٹ کرنے کا لالچ دیا جارہا ہے تاہم عین وقت پر بلدیاتی سیٹ اپ میں ایم این ایز اور ایم پی ایزکے قریبی لوگوں کو لایا جائے گا .

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *