رسول بخش پلیجو کی تیسری برسی، سیاسی شخصیات سمیت کارکنان کی بڑی تعداد کی شرکت

رسول بخش پلیجو

عوامی تحریک کے سربراہ اور ایشیاء کے معروف سیاست دان، قومی ادیب رسول بخش پلیجو کی تیسری برسی ان کے آبائی گاؤں منگر خان پلیجو میں منائی گئی، جبکہ برسی تقریب کورونا وائرس کی وجہ سے منتظمین نے مختصر رکھی تھی۔

رسول بخش پلیجو کی پارٹی و زیلی شاگرد تنظیموں کے علاوہ میرپور خاص، تھر، حیدر آباد، بدین، سجاول اور ٹھھٹہ سے ہزاروں کی تعداد میں عوام نے شرکت کی۔

برسی میں صبح سے مختلف پارٹیوں سے وابسطہ افراد آکر ان کے مزار پر حاضری دیتے رہے، پیپلز پارٹی رہنماء سینیٹر سسی پلیجو نے بھی آکر اپنے چچا رسول بخش پلیجو کے مزار پر دعاء کی اور پھول چڑھائے۔

اس موقع پر سسی پلیجو نے میڈیا کو بتایا کہ میرے چچا رسول بخش پلیجو ایک عظیم سیاست دان تھے جنہوں نے اپنے علم و ادب اور وکالت کے ذریعے نوجوانوں سمیت خواتین کو معاشرے میں جینے اور ہر محاذ پر جدوجہد کرنا سکھایا۔

انھوں نے مزید کہا کہ وہ چھوٹے صوبوں کے حقوق کی علامت تھے، ان کی خدمات ہمیشہ یاد رکھی جائے گی۔

دوسری جانب شام میں عوامی تحریک کا جلسہ شروع ہوا، جس میں سندھیانی تحریک، ہاری تحریک، مزدور تحریک، سندھیانی شاگرد تحریک، سجاگ بار تحریک اور وکلاء فورم تحریک کے رہنماؤں و کارکنان نے ہزاروں کی تعداد میں شرکت کی۔

مقررین نے اپنے خطاب میں کہا کہ عوامی تحریک کے سربراہ رسول بخش پلیجو کو ہم سرخ سلام پیش کرتے ہیں، اشیاء کے عظیم قائد اور انقلابی رہنماء نے ہمیشہ سندھ کی بات کی عورتوں کے حقوق میں کردار ادا کیا بچیوں کی تعلیم کو یقینی بنایا اور سیاسی ادبی علمی میدان دیا سندھ میں ہر قسم کی انتہا پسندی اور طالبانائزیشن کو رد کیا۔

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *