دینی مدارس کو قومی دھارے میں لانے والے خود قومی دھارے میں نہیں ، مولانا فضل الرحمن

جمعیت علماء اسلام کے سربراہ مولانا فضل الرحمن نےکہا کہ دینی مدارس کا کردار قیامت تک جاری رہےگا۔ دینی مدارس کو قومی دھارے میں شامل کرنے کا درس دینے والے پہلے اسلامی دھارے میں شامل ہوں۔ دینی مدارس قومی کے دھارے میں شامل ہی نہیں بلکہ اسکے علمبردار ہیں ۔ دینی مدارس کا نصاب تعلیم ایک ایسا جامع نصاب ہے جس کا متبادل دنیا بھر کی یونیورسٹیز نہیں دے سکی ہیں، مولانا فضل الرحمن

مولانا فضل الرحمن نے گزشتہ روز مولانا ڈاکٹر منظور احمد مینگل کے مدرسہ جامعہ صدیقیہ نادرن بائی پاس میں علماء کرام او طلباء سے خصوصی خطاب بھی کیا اور اس کے بعد قاری محمد عثمان کے جامعہ عثمانیہ شیر شاہ کی جدید جامع مسجد طور کے افتتاح بھی کیا .اس موقع پر جامعہ کے رئیس شیخ الحدیث مولانا منظوراحمد مینگل ،ڈاکٹر عتیق الرحمان ، مولانا راشد محمود سومرو ، حاجی عبدالجلیل جان ، قاری محمد عثمان ، انجنئیر عبداالرزاق عابد لاکھو اور دیگر علماء کرام بھی موجود تھے۔

مولانا فضل الرحمن نے کہا کہ دینی مدارس کو قومی دھارے میں شامل کرنے والے بیرونی ایجنڈے کو نہ صرف مسترد کرتے ہیں بلکہ دینی مدارس کی آزادی اور خود مختاری کا ہر طرح دفاع کریں گے۔ انہوں نےکہا کہ دینی مدارس کے طلباء کیلئے تین چیزیں بہت بڑی اہمیت رکھتی ہیں نمبر 1 کتاب 2 استاد 3 مدرسہ، یہی وجہ ہے کہ طلباء انکا حددرجہ احترام کرتے ہیں جسکی وجہ سے دینی مدارس کے طلباء ہر میدان میں سرخرو ہو رہے ہیں۔

مولانا فضل الرحمن نے کہا کہ دینی مدارس کے طلباء میں عصری مضامین میں ٹاپ کرنے والے طلباء کو ترجیح دینا علوم نبوتﷺ کی توہین کرنے کے مترادف ہے۔ ایسی سوچ قائم کرنے سے دینی علوم کی روح متاثر ہوتی ہے لہذا ارباب مدارس کو ایسی سوچ کی حوصلہ افزائی کے بجائے حوصلہ شکنی کرنی چاہئیے۔ انہوں نےکہا کہ دینی مدارس علوم نبوتﷺ کی چھاؤنیاں ہیں انہیں قومی دھارے میں شامل کرنے کے بیرونی ایجنڈے کی تکمیل سے دینی مدارس کی اصل حیثیت کو مجروح کرنے کی کوشش کو ناکام بنادیا جائے گا۔

علاوہ ازیں قائد جمعیت مولانا فضل الرحمن نے جماعتی احباب کے ہمراہ جامعہ دارالخیر گلستان جوہر جاکر شیخ الحدیث مولانا محمد اسفند یار خان کے انتقال پر انکے صاحبزادوں سے اظہار تعزیت اوردعائے مغفرت کرتے ہوئے کہاکہ مولانا اسفندیار خان رح نے اپنی ساری زندگی علوم نبوتﷺ کی اشاعت اور ملک میں اسلام کی سربلندی کیلئے وقف کررکھی تھی۔ وہ علم و حکمت کے پہاڑ تھے۔ انہوں نے کہاکہ مولانا اسفندیار خان رح کی دینی قومی اور ملی خدمات کو ہمیشہ یاد رکھا جائے گا۔

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *