بچوں کے کھلونوں کی آڑ میں کروڑوں روپے کے پٹاخے اسمگل کرنے کی کوشش

رپورٹ : عبداللہ ہمدرد

پورٹ قاسم کلکٹریٹ پر بچوں کے کھلونوں کی آڑ میں امپورٹ پالیسی کے برخلاف کروڑوں روپے مالیت کے پٹاخے اسمگل کرنے کی کوشش نا کام بنا دی گئی ، ماضی میں پٹاخوں کی کنسائمنٹ میں دھماکوں کے باعث درآمد پر مکمل پابندی لگا دی گئی تھی .

حالیہ کنسائمنٹ کے ایک کنٹینر سے پٹاخے برآمد ہونے پر دیگر کنٹینروں کی جانچ کے لئے کمیٹی بنادی گئی ۔ذرائع کے مطابق ماڈل کسٹم کلکٹریٹ پورٹ قاسم نے بچوں کے کھلونوں کی آڑ میںپٹاخے اسمگل کرنے کی کوشش ناکام بناتے ہوئے کسٹم ایکٹ کے تحت مقدمہ درج کرلیا گیا ہے ۔

ذرائع نے بتایا کہ پورٹ قاسم پر گرین چینل سے میسرز ابرار ٹریڈرز نے کلیئرنگ ایجنٹ میسرز اے آر لاجسٹک فیلڈ کے ذریعے گڈز ڈی کلیریشن فائل کی اس کنسائمنٹ میں درآمد کنندگان کی جانب سے بچوں کی گاڑیاں ، سائیکلیں اور دیگر ظاہر کیا گیا تھا ،تاہم ایگزامینیشن کے دوران اس کنسائمنٹ سے کروڑوں روپے مالیت کے پٹاخے برآمد کرلئے گئے ۔

ذرائع نے بتایا کہ امپورٹ پالیسی میں آئٹم ممنوعہ ہونے کے بعد سے پٹاخوں کی خرید وفروخت کے لئے چین اور دیگر ممالک سے مختلف کنسائمنٹ میں چھپاکر کلیئرکرانے کی کوشش کرتے ہیں اور سی پورٹ سے کسٹم حکام کی ملی بھگت سے کنسائمنٹ کلیئرہونے کے بعد پٹاخوں کو ہائی ویز پر قائم مختلف وئیر ہاوس میں رکھا جاتا ہے اور اندرون ملک جانے والے گڈز ٹرانسپورٹ سروسز کے ذریعے ان وئیر ہاوسسز سے پٹاخے نکال کر ملک بھر میںسپلائی کردئیے جاتے ہیں ۔

کسٹم ذرائع نے بتایا کہ کسٹم کلکٹریٹ پورٹ قاسم کی کارروائی کے بعد اس کنسائمنٹ میں موجود دیگر کنٹینرز کی ایگزامنیشن کے لئے کمیٹی تشکیل دے دی ہے.

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *