تھانہ جمیشد کوارٹر : اینٹی تھیفٹ سیل کی ایما پر غیر قانونی کنکشن کرنے والے 6 کارندے گرفتار

کراچی : تھانہ جمشید کورارٹر پولیس نے لیاری ندی سے پانی کی چوری کے دوسرے بڑے نیٹ ورک کے سرغنے عجب خان باوانی کے 6 کارندے رنگے ہاتھوں گرفتار کر لئے ۔

لیاری جانے والی واٹر بورڈ کی 33 انچ قطر کی لائن سے لئے گئے متعدد کنکشن منقطع کرنے کے لئے پولیس نے واٹر بورڈ اینٹی تھیفٹ سیل اور ڈبلیو ٹی ایم کی ٹیم کو طلب کر لیا ہے ۔

رات گئے تھانہ جمشید کوارٹر پولیس نے خفیہ اطلاع پر کارروائی کرتے ہوئے لیاری ندی لسبیلہ پل کے اطراف میں 33 انچ قطر کی لائن سے غیر قانونی کنکشن کرتے ہوئے 6 کارندے گرفتار کر لئے ۔ پولیس کو معلوم ہوا ہے کہ مذکورہ 6 کارندے عجب خان باوانی کے منشی صدیق کے حکم پر لائن جوڑ رہے تھے ۔

مذید پڑھیں :واٹر بورڈ : راشد صدیقی نے لیاری ندی کے غیر قانونی کنکشن بحال کر دیئے

مذکورہ کاندوں میں ظہیر اللہ ، سفید خان سمیت دیگر شامل ہیں ۔جن کو پولیس نے لاک اپ کے بجائے ہیڈ باہر ہی بیٹھا رکھا تھا ۔ ادھر پولیس نے واٹر بورڈ ڈبلیو ٹی ایم کے افسران کو بھی رابطے میں لیا اور ان کو تھانہ میں بلایا ، تاہم ڈبلیو ٹی ایم کے ایگزیکٹیو انجنیئر تنویر۔ شیخ نے اپنے ڈبلیو ٹی ایم کے سپروائزر عبدالغفار کو تھانہ بھیجا ۔

اس دوران پولیس کی جانب سے اینٹی تھیفٹ سیل کے انچارج راشد صدیقی سے رابطہ کیا گیا تو راشد صدیقی نے اپنے دو ملازمین جن میں ایم کیو ایم لندن سے تعلق رکھنے والے حسن حیدر اور ایم کیو ایم لندن کے کارکن اور بدنام زمانہ گریڈ 2 کے ملازم ندیم مقبول تھانے پہنچ گئے ۔ جس کے بعد پولیس کی جانب پکڑے گئے کارندوں اور ضبط کئے جانے والے دو جنریٹر ، جوائنڈر کا معائنہ کرایا گیا ۔

بعد ازاں اینٹی تھیفٹ سیل کے دونوں ملازمین نے ایف آئی آر درج کرانے میں لیت و لعل سے کام لیا اور جائے وقوعہ کے معائنے کا جھانسہ دیکر اینٹی تھیفٹ سیل کے ملازمین رفو چکر ہو گئے جس کے بعد ڈبلیو ٹی ایم کے ایگزیکٹیو انجنیئر تنویر شیخ نے اپنے سپروائزر عبدالغفار کو مقدمہ درج کرانے کے لئے بھیج دیا تھا ۔

مذید پڑھیں :کراچی :SSPویسٹ کی ہدایت پر منگھوپیر پولیس کی پانی چوروں کیخلاف کارروائی

جمشید کوارٹر تھانے کے ہیڈ محرور حفیظ نے نمائندہ الرٹ کو بتایا کہ ہم نے 23 جنوری 2021 کو ایس ایس پی جمشید اور واٹر بورڈ کے افسران کو خط لکھا کہ وہ آئیں اور غیر قانونی پانی کنکشن کی اطلاع اور نشاندہی کریں کیوں کہ علاقوں میں بہت زیادہ شکایات ہیں ۔ تاہم گزشتہ 4 ماہ سے کوئی بھی مقدمہ درج کرانے یا نشاندہی کرنے نہیں آیا ہے ۔

حیرت انگیز طور پر اینٹی تھیفٹ سیل کے دونوں ملازم ندیم مقبول اور حسن حیدر فون پر مقدمہ میں تاخیری حربے استعمال کرتے رہے اور پانی کی لائنیں لینے والے عجب خان باوانی اور اس کے منشی صدیق سے جوڑ توڑ کرنے کے لئے مسلسل راشد صدیقی سے رابطے کرتے رہے ۔

واضح رہے کہ الرٹ نیوز نے 25 مئی کو لیاری ندی میں غیر قانونی کنکشن اور لائن کے حوالے سے نشاندہی بھی کی تھی ۔ جس کے باوجود اینٹی تھیفٹ سیل کے افسران نے مافیا کے لئے کنکشن جاری رکھے تھے تاہم رات کو پولیس نے رنگے ہاتھوں گرفتاریاں کی ہیں ۔ الرٹ کی جانب سے بنائی جانے والی ویڈیو کو اس لنک https://www.youtube.com/watch?v=VTM4gDDpeiY میں دیکھا جا سکتا ہے ۔

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *