سندھ پولیس تباہی کے دہانے پر، تہلکہ خیز انکشافات سامنے آگئے

سندھ پولیس

اب کراچی میں سندھ حکومت کی ناک کے نیچے کھیل جاری، ہے شہزاد اکبر، حماد اظہر، انیل مسرت جیسے قادیانی وفاقی وزرا کے بعد اب سندھ پولیس کے حساس ادارے سی ٹی ڈی میں بھی قادیانی جیمز بانڈ آفیسر تعینات کیا گیا ہے۔

لندن سے قادیانیوں کے مرکزی خلیفہ مرزا مسرور کے کارندے خاص اور قادیانی جیمز بونڈ کہلانے والے ڈی ایس پی نعیم  سناٹا کی ہنگامی بنیادوں پر CTD میں پوسٹنگ کی جارہی ہے۔

مرزا مسرور کے احکامات کی تعمیل میں مصروف قادیانی لابی نے 18 سال سے جلا وطن انسپکٹر کے عہدے پر ہونے والے نعیم سناٹا کو 18 سال بعد آمد پر خلاف ضابطہ ڈی ایس پی پرموٹ کروادیا گیا۔

بات یہیں ختم نہیں ہوتی، بلکہ پرموشن کے ساتھ ہی ڈی ایس پی کو ایس ایس پی سی ٹی ڈی کا چارج بھی دے دیا گیا۔

مذکورہ ڈی ایس پی اتنا طاقتور ہے کہ موجودہ ایڈیشنل آئی جی سی ٹی ڈی اور آئی جی سندھ بھی اس کو کچھ نہیں کہہ سکتے۔

سپریم کورٹ اور اعلیٰ افسران کے احکامات کو بالائے طاق رکھتے ہوئے ابھی تک ایس ایس پی CTD گارڈن کی سیٹ پر براجمان ہے۔

قادیانی جیمز بانڈ ڈی ایس پی نعیم سناتا نے سی ٹی ڈی کے اندر سنی مدارس اور سنی مسلمانوں کے خلاف ایک سیل بھی متحرک کر دیا ہے اس سیل کا نام سنی مدارس انٹیلیجنس سیل رکھا گیا ہے، مذکورہ سیل صرف اور صرف سنی مسلمانوں اور مدارس کے خلاف کارروائیوں میں متحرک ہے۔

نعیم سناٹا نے اب تک کئی سنی علماء کو غائب کر دیا اور کہیں مدارس کے خلاف کارروائیوں کے لیے لیٹر لکھ دیے ہیں۔

لمحہ فکریہ ہے کہ قادیانی لابی ڈائریکٹ اسلام آباد سے قادیانی وزیروں اور مشیروں کے ذریعے افسرانِ بالا پر دباؤ ڈالتے ہیں سنی علماء اور مدارس کے خلاف غلط رپورٹنگ کرکے بلیک لسٹ اور ختم کرنے کے درپے ہے۔

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *

Exit mobile version