منی لانڈرنگ میں ملوث مافیا کے خلاف مقدمات کی تعداد 10ہوگئی ہے۔

رپورٹ : عبداللہ ہمدرد

ڈائریکٹوریٹ آف کسٹم انٹیلی جنس اینڈ انوسٹی گیشن کے شعبہ اسپیشل انوسٹی گیشن یونٹ (ایس آئی یو) نے کراچی ایکسپورٹ پروسسنگ زون کے ذریعے جعل سازی سے قومی خزانے کو نقصان پہچانے اور جعلی دستاویزات کی امپورٹ پر بینکنگ چینل سے اربوں روپے بیرون ملک منتقل کرنے والی مافیا کے خلاف مزید دو مقدمات درج کرلئے ، منی لانڈرنگ میں ملوث مافیا کے خلاف مقدمات کی تعداد 10ہوگئی ہے۔

ذرائع کے مطابق ڈائریکٹوریٹ آف کسٹم انٹیلی جنس اینڈ انوسٹی گیشن کے شعبے اسپیشل انوسٹی گیشن یونٹ نے اسٹیل شیٹس کی آڑ میں کراچی ایکسپورٹ پروسسنگ زون اتھارٹی (کے ای پی زیڈ اے) میں موجود کمپنیوں کے نام پرجعل سازی سے قومی خزانے کو مس ڈیکلئریشن کے ذریعے ٹیکس ڈیوٹی میں کروڑوں کا نقصان پہچانے والی مافیا کے خلاف تحقیقات کو تیزی سے آگے بڑھایا جارہا ہے اور اس ضمن میں اسپیشل انوسٹی گیشن یونٹ کی تحقیقاتی ٹیم نے مزید شواہد ملنے پر میسرز رائل امپکس پرائیوٹ لمیٹیڈ کے ای پی زیڈ ،میسرز حسن اسٹیل ،میسرز بلوچستان انجینئرنگ اور میسرز کوسموس ٹریڈنگ کے پروپرائٹر عبداللہ شیخ کے خلاف دو علیحدہ علیحدہ مقدمات کا اندراج کرلیا ہے ۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ جن کنسائمنٹ پر مقدمات کا اندراج کیا گیا ہے ان کنسائمنتس کے حوالے سے واضح شواہد ملے ہیں کہ مذکورہ کمپنیوں کے عہدیداروں نے ملی بھگت سے کمرشل انوئسسز اور پیکنگ کے لئے مہیا کی گئی فہرست میں ردوبدل کیا ہے ۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ مذکورہ کنسائمنٹ کی آڑ میں جعل سازی پر ٹیکس ڈیوٹی چوری کرنے میں حکومتی خزانے کو 50لاکھ سے زائد کا نقصان اٹھانا پڑا جب کہ ان ہی کنسائمنٹ پر بینکنگ چینل کے ذریعے تین کنسائمنٹ پر سات لاکھ ڈالر بینکنگ چینل کے ذریعے بیرون ملک بھیج دئیے گئے جب کہ ان کنسائمنٹ کی بیرون ملک جانے کے کوئی شواہد موجودنہیں ہیں ۔کسٹم ذرائع کا کہنا ہے کہ اب تک منی لانڈرنگ کی اس واردات پر درج مقدمات کی تعداد 10ہوگئی ہے تاہم ان مقدمات میں نامزد کمپنیوں کے عہدایداروں نے سندھ ہائی کورٹ سے ضمانت قبل از وقت گرفتار ی حاصل کر رکھی ہے۔

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *