جامعۃ الرشید کے مفتی محمد کا قضا کے مسئلے پر مفتی منیب الرحمن کا رد

کراچی : جامعة الرشید کراچی کے رئیس دار الافتاء مفتی محمد نے روزے اور اعتکاف کی قضا کے حوالے سے پیدا ہونے والی تشویش پر اہم فتوی جاری کیا ہے ۔ جس میں مفتی منیب الرحمن کی بات کا رد کر دیا ہے ۔

مفتی منیب الرحمن نے مرکزی رویت ہلال کمیٹی کے فیصلے کو غلط قرار دیکر عید کے خطبہ میں اعلان کیا تھا کہ میں بھی جمعہ کو روزہ کی قضا کروں گا اور عوام بھی روزے اور ایک روزہ اعتکاف کی قضا کر لے ۔

جس کے بعد مرکزی رویت ہلال کمیٹی کے ایک ممبر مفتی راغب حسین نعیمی نے بھی اس اعلان کی توثیق کی تھی ۔ تاہم اس کے بعد عوام کی جانب سے متعدد مدارس کے دارافتا سے رجوع کیا جا رہا تھا کہ روزے کی قضا کی جائے یا نہیں ؟۔

مذید پڑھیں :مولوی کے ساتھ ہو کیا رہا ہے

جس کے بعد جامعۃ الرشید کے مفتی محمد نے ایک وائس نوٹ جاری کیا کہ جس میں ان کا کہنا تھا کہ ’’ مجاز اتھارٹی اگر شہادتیں لیکر اس کے بعد رویت کا اعلان کر دے تو اس کے بعد نہ روزے کی قضا ہے نہ اعتکاف کی قضا ہے ۔

عید کے چاند کا اعلان جب اتھارٹی کر دیا ہے ، وہ شہادتیں درست تھیں یا غلط ، جب اتھارٹی نے اعلان کر دیا ہے تو اس کے بعد کسی شکوک و شبہات میں نہ رہا جائے ۔ لوگوں کو جو تشویش ہے اس کے پیش نظر ہم یہ کہتے ہیں کہ مرکزی رویت ہلال کمیٹی کا اعلان شرعا درست ہے ۔

جو لوگ اس طرح کی باتیں کر رہے ہیں وہ شرعا درست نہیں کر رہے ۔ گزشتہ برس مفتی منیب الرحمن جب چیئرمین مرکزی رویت ہلال تھے تب انہوں نے گوادر کی ایک گواہی پر اعلان کیا تھا جس کے بعد ہمارے فلکیات کے شعبے کے علما متعلقہ گواہی دینے والوں کے پاس گئے تو اس نے غلط فہی قرار دیا تھا ۔ اس سے قبل تلہار بدین کی ایک گواہی پر فیصلہ ہوا تھا ، اس وقت بھی تشویش ہوئی تھی ۔ تاہم ہمارے اکابر نے قضا کا فتوی نہیں دیا تھا ۔

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *