بیت المقدس پر اسرائیلی جارحیت کیخلاف متحدہ علماء محاذ کا احتجاجی اجلاس

کراچی : متحدہ علماء محاذ میں شامل مختلف مکاتب فکر کے علماء مشائخ و ذاکرین نے بیت المقدس میں اسرائیلی فائرنگ و دہشت گردی کی شدید مذمت کرتے ہوئے اسے دنیا کی بد ترین دہشت گردی قرار دیا ہے۔

علماء نے بیت المقدس و فلسطینیوں پر اسرائیلی جارحیت کو مسلم حکمرانوں کی غیرت ایمانی،دینی حمیت اور اخوت اسلامی کے خلاف کھلا چیلنج اور تازیانہ قرار دیتے ہوئے کہا کہ اسرائیل کو تسلیم کرنے والے اب تو ہوش کے ناخن لیں اور اسلام و مسلمانوں کے خلاف اسرائیل، امریکہ و استعماری سازشوں کو سمجھیں۔

اسرائیل عالم اسلام کے لیے ناسور ہے،جسکی نا بودی اورقبلہ اول بیت المقدس کی حفاظت و آزادی کے لیے امہ کی وحد ت و بیداری کی ضرورت ہے۔ علماء نے کہا کہ سانحہ میں شہید ہونے والے حماس کے کمانڈرسمیت دیگر شہداء و زخمیوں کی عظیم قربانیاں ضرور جلد رنگ لائیں گی، اسرائیل کا نام و وجود مٹنے کو ہے اور القدس کی فتح قریب ہے اور اسلامی ایٹمی پاکستان فلسطین و کشمیر اور عالم اسلام کے لیے دفاعی حصار ہے۔

قبلہ اول آج فاتح اول سیدنا فاروق اعظم ؓ اور فاتح دوم سلطان صلاح الدین ایوبی جیسی عظیم قیادت کو پکار رہا ہے۔ان خیالات کا اظہار علماء نے مرکزی سیکریٹریٹ گلشن اقبال میں احتجاجی اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔

مذید پڑھیں :سٹی ٹریفک پولیس پشاور نے عید الفطر کیلئے منظم ٹریفک پلان تشکیل دیدیا

اجلاس میں اقوام متحدہ سے اسرائیل کی رکنیت ختم کرنے کا پرزور مطالبہ کیا گیا۔ اجلاس سے میزبان و بانی سیکریٹری جنرل مولانا محمد امین انصاری،مرکزی صدر حجتہ الاسلام علامہ مرزا یوسف حسین، مولانا انتظار الحق تھانوی، علامہ عبد الخالق فریدی، علامہ قاضی احمد نورانی صدیقی، شیخ الحدیث مولانا سلیم اللہ ترکی، خطیب اہلبیت علامہ علی کرار نقوی، علامہ سید سجاد شبیر رضوی، مطلوب اعوان قادری، علامہ شاہ فیروز الدین رحمانی، علامہ سید اطہر مشہدی، علامہ مرتضی خان رحمانی و دیگر نے خطاب کیا۔

اس موقع پر فلسطین و کشمیر کے مظلوم مسلمانوں اور افواج پاکستان کے ساتھ یکجہتی کا اظہار کیا گیا۔ مولانا انصاری کی جانب سے معزز شرکا علماء کی افطار و ڈنرسے ضیافت کی گئی۔خطیب پاکستان مولانا انتظار الحق تھانوی کی اقتدا میں تمام مکاتب فکر کے علماء نے نماز مغرب ادا کی اور ملکی امن و استحکام اور کورونا کے عذاب سے فوری نجات کے لیے خصوصی دعا کی گئی ۔

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *