جماعت اسلامی PTI کی اب بھی حمایتی ہے ؟

تحریر : عثمان غازی

ایک مفروضہ ہے کہ جماعتی اور لبرلز عمران خان کے خلاف ہیں اور اس بات پر پی ٹی آئی کے دوست لاٹھیاں لے کر ان کے پیچھے چڑھ دوڑے ہیں۔

جماعت اسلامی ایک پریشر گروپ ہے، یہ باقاعدہ سیاسی جماعت کبھی بھی نہیں رہی، اسلامی جمہوری اتحاد کی کوکھ سے جماعت اسلامی نے ہی مسلم لیگ نون کی ڈلیوری کرائی تھی اور نیٹو سپلائی کے خلاف احتجاج کے بطن سے پی ٹی آئی کی ڈلیوری کرانے والی دائی بھی جماعت اسلامی ہی ہے، یہ پریشر گروپ اشرافیہ اور مقتدر قوتوں کی ہدایات پر کام کرتا ہے، جماعت اسلامی میں سے بعض افراد چونکہ طویل عرصے تک اپنے فرسٹ بے بی مسلم لیگ نون کی حمایت کرتے رہے تو وہ سیکنڈ بے بی پی ٹی آئی کو دل سے قبول نہ کرپائے اور انفرادی طور پر تنقید کرنے لگے، یہیں سے غلط فہمی پیدا ہوئی کہ جماعت اسلامی پی ٹی آئی کے خلاف ہے۔

پی ٹی آئی کا تھنک ٹینک جماعت اسلامی کے نظریات رکھنے والے افراد پر مشتمل ہے، آپ کبھی پی ٹی آئی کی جانب سے آفیشلی جماعت اسلامی پر تنقید نہیں سنیں گے، سینیٹ چیئرمین کے خلاف رائے شماری کے دوران اگر جماعت اسلامی اپوزیشن کے ساتھ مل جاتی تو پی ٹی آئی کو دھاندلی کا موقع نہ ملتا کیونکہ مخالف ووٹوں کی شرح بڑھ جاتی، جماعت اسلامی اب تک کسی بھی پلیٹ فارم پر پی ٹی آئی کے خلاف نہیں گئی اور نہ پی ٹی آئی جماعت اسلامی کے خلاف ہے، مہنگائی و بے روزگاری کے ایشوز پر حکومت پر جماعت اسلامی کی روایتی تنقید محض اپنی جداگانہ حیثیت کو برقرار رکھنے کے لئے ہے۔

جہاں تک لبرلز کا تعلق ہے تو یہ بات ذہن میں رکھیں کہ فی زمانہ علاوہ مستثنیات مجموعی طور پر لبرلز کسی بھی سیاسی جماعت کے ساتھ نہیں ہیں بلکہ یہ لوگ بیانئے کے ساتھ ہیں، لبرلز، سوشلسٹ، لیفٹ نظریات رکھنے والے لوگ مقتدر قوتوں کے جابرانہ اقتدار کے خلاف ہیں، اب اگر میاں نواز شریف ووٹ کو عزت دو کا نعرہ لگاتے ہیں یا بلاول بھٹو زرداری سلیکٹڈ حکومت پکارتے ہیں تو یہ لوگ ان کا ساتھ دیتے ہیں، جب سے مسلم لیگ نون کی سیاست کا محور ووٹ کو عزت دو کے نعرے سے بیرون ملک جانے پر ہوا ہے، یہی لبرلز ان سے گریز کرتے دکھائی دے رہے ہیں۔

پی ٹی آئی کے دوست پاپولسٹ نعروں کی بنیاد پر سیاست کرتے ہیں، ان لئے ان کے کانسپٹ کلیئر نہیں ہیں، پی ٹی آئی تیکنکی طور پر مسلم لیگ نون کی طرح ایک دائیں بازو کی پارٹی ہے مگر نظریات کے بجائے پاپولرازم کی بنیاد پر تشکیل کی وجہ سے وہ فی الحال رائٹ ہے نہ لیفٹ۔۔ لبرل ہے نہ مذہبی ۔۔ اسی لئے اس پارٹی کے لوگوں کو صحیح سے مخالفت کرنا بھی نہیں آتی۔

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *