جامعہ اردو سینیٹ کا مکمل اجلاس طلب کرکے قائم مقام وائس چانسلر کا تقررکیا جائے ،انجمن اساتذہ

رپورٹ : اختر شیخ

وفاقی اردو یونیورسٹی میں انتظامی بحران شدت اختیار کرتا جا رہا ہے ، وفاقی اردو یونیورسٹی کی انجمن اساتذہ نے صدر مملکت و چانسلر ڈاکٹر عارف علو ی سے سینیٹ کا فوری اجلاس طلب کر کے جامعہ میں وائس چانسلر کی تقرری کا مطالبہ کیا ہے جبکہ جامعہ کی نامزد کنندہ کمیٹی نے سینیٹ اراکین مکمل کرنے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا وائس چانسلر کا انتخاب اس وقت تک نا ممکن ہے جب تک سینٹ کا کورم مکمل نہ ہو۔

سینیٹ اجلاس کے لیے اراکین کی تعداد 9 ہونی چاہیے جبکہ وائس چانسلر کی عدم موجودگی کے باعث اراکین کی تعداد 8 ہے، ایک ماہ قبل نامز د کنندہ کمیٹی نے 6 اراکین کے ناموں کی سفارش ایوان ِ صدر کو بھیجی تھی تاہم اس پر پیش رفت نہ ہو سکی۔

انجمن اساتذہ (گلشن اقبال کیمپس)کے نائب صدرڈاکٹر گوہر علی مہر اور جنرل سیکریٹری ڈاکٹر فرحان شفیق نے جامعہ میں وائس چانسلر کی تقرری کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ کچھ عناصر خود کو اساتذہ کی نمائندہ اورا نتظامیہ کا حصہ ظاہر کر کے صدر مملکت وچانسلر جامعہ اردو اوروزارت ِ تعلیم کو خط لکھ کر جامعہ اردو کے قائم مقام شیخ الجامعہ کیلئے من پسند نام تجویز کرچکے ہیں جس سے یہ مفاد پرست عناصر ایوان صدر اور وزارت تعلیم کو گمراہ کرنے کی بھرپور کوشش کررہے ہیں۔

انہوں نے واضح کیا کہ انجمن اساتذہ گلشن اقبال کیمپس جامعہ اردو میں اساتذہ کی نمائندہ جماعت ہے اور وہ اس اقدام کی بھرپور مذمت کرتی ہے۔اس طرح کے کاموں میں ملوث افراد کا تعلق جامعہ کے کسی بھی تدریسی و غیر تدریسی انجمن سے نہیں ہے۔ اس سلسلے میں انجمن اساتذہ گلشن اقبال کیمپس وفاقی اردو یونیورسٹی کے قانون کی شق کے مطابق کسی وقت بھی جب وائس چانسلر کا دفتر خالی ہو یا وائس چانسلر غیر حاضر ہو، یا علالت یا کسی اور وجہ سے اپنے فرائض انجام نہ دے سکتا ہو تو سینیٹ جس طرح بھی مناسب سمجھے وائس چانسلر کے فرائض کی ادائیگی کے انتظامات کر سکتی ہے۔

انجمن اساتذہ نے صدر مملکت و چانسلر ڈاکٹر عارف علوی سے اپیل کی ہے کہ ترجیحی بنیادوں پر جامعہ اردو کی سینیٹ کا فوری اجلاس طلب کر کے وائس چانسلر کے تقرری کے لیے اقدامات کئے جائیں تاکہ جامعہ اردو کو شدید انتظامی بحران سے نکالا جاسکے۔ دوسری جانب وفاقی اردو جامعہ نامزد کمیٹی نے سینیٹ کا کورم مکمل نہ ہونے تک وائس چانسلر کی تقرری ناممکن قرار دیدی۔

وفاقی جامعہ اردو کی نامزد کنندہ کمیٹی کے رکن افتخار طاہری کا کہنا تھا کہ کی نامزد کنندہ کمیٹی منعقدہ 17 نومبر 2019 کی کارروائی کو یونیورسٹی کی سینیٹ نے منظور کرکے 6 ارکین سینیٹ کے ناموں کی حتمی فہرست 29 ستمبر کو ایوان صدر بھیج دی تھی۔ سینیٹ میں اراکین کی تعداد کورم کے لئے ضروری تعداد سے بھی کم رہ گئی ہے قواعد کے مطابق 9منتخب سینیٹ ممبران کا ہونا لازمی ہے ، چانسلر خود بھی شریک ہوجائیں تو بھی کورم پورا نہیں ہوسکتا۔

افتخار طاہری کا کہنا تھا کہ صدرمملکت صرف ایک دستخط سے کورم مکمل کرسکتے ہیں اور ساتھ ہی اجلاس بھی طلب کرسکتے ہیں۔وائس چانسلر کی اسلام آباد ہائی کورٹ کی جانب سے برطرفی کے بعد یونیورسٹی کی سینیٹ نے قائم مقام وائس چانسلر اور مستقل وائس چانسلر کا تعین کرنا ہے۔ نامزد کنندہ کمیٹی کے رکن ڈاکٹر افتخار احمد طاہری نے صدر پاکستان سے اپیل کی ہے کہ وہ یونیورسٹی کی سینیٹ کو مکمل کروائیں تاکہ یونیورسٹی میں موجود انتظامی بحران کے خاتمہ ہو سکے۔

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *