رمضان میں کالعدم ٹی ایل پی کارکنان پر مزید لاٹھی چارج روکا جائے، صفدر خان باغی

PMLQ leader KP

پشاور: گلوبل ٹائمز میڈیا رپورٹ کے مطابق پاکستان مسلم لیگ ق کے صوبائی ترجمان خیبر پختونخوا صفدر خان باغی نے کہا کہ حکومت سے درمندانہ اپیل کرتے ہے کہ رمضان المبارک کے مبارک عشرے میں کالعدم تحریک لیبک کے کارکنوں پر مزید لاٹھی چارج و خونیرزی کو روکا جائے۔

مسلم لیگ ق کے صوبائی ترجمان صفدر خان باغی نے کہا کہ سانحہ کارساز، سانحہ بلدیہ ٹاؤن، سانحہ ماڈل ٹاؤن کو نہ دوہرایا جائے۔

انہوں نے کہا کہ کالعدم تحریک لبیک کے کارکنان، پولیس، رینجرز سب محب وطن پاکستانی اور مسلمان و سچے عاشقان رسول کریم صلیٰ اللّٰہ علیہ وآلہ وسلّم ہیں۔

صوبائی ترجمان خیبر پختونخوا صفدر خان باغی نے کہا کہ وفاقی حکومت تمام اتحادی جماعتوں اور علماء کرام کو اعتماد میں لینے کے ساتھ ساتھ تمام سیاسی جماعتوں کی اے پی سی کانفرنس فلفور بلوا کر اس گھمبیر مسئلے کا حل ریاستی طاقت کی بجائے اعتدال اور میانہ راوی اور دانشمندی کے ساتھ مذاکرات سے حل کرنے کی کوشش کرے۔

ان کا کہنا تھا کہ اگر وفاقی و صوبائی حکومتوں نے بروقت ہوش کے ناخن نہ لیے تو حالات مزید بگڑ سکتے ہیں اور مزکورہ جماعت کی جانب سے شدت اشتعال انگیزی کا جواب ریاستی طاقت و قوت سے جواب دینے کی کوشش کی گئی تو خدا ناخواستہ رمضان المبارک کے دوران اور اس کے بعد مزید ملکی حالات بگڑ نے کا خدشہ ہے، اس وقت ملک دشمن عناصر قوتوں کی نظریں ریاست پاکستان کی موجودہ معاشی سماجی لسانیات و مزہبی حالات پر ٹیکی ہوئی ہیں۔

پاکستان مسلم لیگ ق کے صوبائی ترجمان خیبر پختونخواہ صفدر خان باغی نے بین الاقوامی گلوبل ٹائمز میڈیا یورپ کے ساتھ ایک اخباری میں کہا کہ حکومتی عہدیداروں کو ذمےداری اور عقلمندی ہوش سے کام لینا ہوگا نہ کہ جوش و جذبات سے، دشمن گھات لگائے بیھٹا ہے کہ ایک بار پھر مذہبی منافرت کے ذریعہ ملک میں انتشار فسادات توڑ پھوڑ اشتعال کے ذریعے انارکی پھیلائی جائے اور خدانخواستہ ملک کو نقصان پہنچایا جائے۔

انہوں نے وفاقی حکومت سے درمندان اپیل کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ تحریک انصاف مرکزی سینئر قیادت ماضی کے المناک واقعات سانحہ کارساز،سانحہ بلدیہ ٹاون،سانحہ ماڈل ٹاؤن سے سبق سیکھے ۔اج ایک بار پھر ماضی کے برے واقع کی طرح لاہور میں یتیم خانہ میں بے گناہ نوجوان روزے کی حالت میں سراہا احتجاج ہیں اور انکو لہو لہان زخمی کیا جا رہا ہے جیسے کہ ماضی کی وفاقی حکومتوں کی ناقص پالیسیوں اور بے رحمانہ ظلم و جبر پر مبنی فیصلوں کے زریعہ غریب بے بس لاچار معصوم عوام کو اپنے ظلم کا نشانہ بنایا اگر یہی رویش موجودہ حکومت نے دھرائی تو خدانخواستہ یہ احتجاج خطرناک شکل اختیار کر سکتا ہے اور ریاست کے اندر دوسری کمزور طاقتوں کو تقویت ملے گی جسکو کنٹرول کرنا مشکل ہو جائے گا عوام پہلے سے ہی مہنگائی و زخیرہ اندوز معافیہ کے ہاتھوں پریشان اور مالی مشکلات اور کرونا کاک ڈاؤن کی وجہ سے زہنی و جسمانی پریشانی سے دو چار ہے۔

انھوں نے کہا کہ وفاقی حکومت تحریک لبیک پارٹی کی جانب سے کشیدگی کو بڑھانے کے بجائے موجودہ صورتحال میں صبر و تحمل استقامت سے کام لے اور بیک ڈور پالیسی کے زریعہ مزاکرات کا سلسلہ شروع کرے تا کہ ملک میں امن و عامہ کے حالات کو یقینی بنایا جاسکے۔

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *