جیل چورنگی کے قریب WTM کی 48 انچ کی لائن پر غیر قانونی ہائیڈرنٹ قائم

کراچی : واٹر بورڈ کی ڈبلیو ٹی ایم کی 48 انچ قطر کی لائن پر جیل چورنگی کے قریب اینٹی تھیفٹ سیل کی ملی بھگت سے غیر قانونی ہائیڈرنٹ چلایا جا رہا ہے ۔

کراچی شہر میں ایک بار پھر غیر قانونی ہائیڈرنٹ شروع ہو گئے ہیں ۔ کورنگی میں ندی کے قریب جمعہ گوٹھ میں پرویز جدون ، ندی سے متصل باغیچہ میں طارق خان خٹک ، کورنگی انڈسٹریل ایریا میں نور محمد عرف نورا ، مرتضی چورنگی کے قریب فضل عباسی اور کورنگی بند کے قریب بھینسوں کے باڑوں کے قریب مسجد کی آڑ میں شعور الدین میمن غیر قانونی ہائیڈرنٹ چلا رہے ہیں ۔

ذرائع کے مطابق مذکورہ غیر قانونی ہائیڈرنٹس کے مالکان کو واٹر بورڈ اینٹی تھیفٹ سیل کی آشیرباد حاصل ہے ۔ جو ماہانہ لاکھوں روہے دیکر ہائیڈرنٹ چلا رہے ہیں ۔ اور سید ناصر حیسن شاہ کو ماہانہ اور ہفتہ واری کروڑوں روپے دینے کے بھی دعویدار ہیں ۔

مذید پڑھیں :لاہور : آپریشن کی اندورنی کہانی عینی شاہد کی زبانی

حیرت انگیز طور پر واٹر بورڈ کی مسلم آباد کالونی جہاں گریڈ 16 سے گریڈ 19 تک کے اعلی افسران رہائش پذیر ہیں ، ان کی ناک کے نیچے جیل چورنگی چیز اپ کے سامنے گراونڈ میں جھاڑیوں کی آڑ میں غیر قانونی ہائیڈرنٹ چلایا جا رہا ہے ۔ مذکورہ ہائیڈرنٹ 48 انچ قطر کی ڈبلیو ٹی ایم کی لائن پر قائم ہے ۔ جس سے کلفٹن سمیت دیگر علاقوں کو پانی کی سپلائی کی جاتی ہے ۔اس لائن کی ذمہ داری سپرٹینڈنٹ انجنیئر جعلی ڈگری ہولڈر اور غیر قانونی پانی کی لائنوں کا سرپرست تنویر احمد شیخ ہے ۔

واٹر بورڈ کی مسلم آباد کالونی کے قریب گرائونڈ میں ضمیر نامی شخص غیر قانونی ہائیڈرنٹ چلایا جا رہا ہے ۔ جو فلنگ پائپ لگا کر یومیہ 3 ہزار گیلن کے 100 ٹینکر فلنگ کرتے ہیں ۔ ضمیر رات کو 8 بجے کے بعد صبح 6 بجے تک ہائیڈرنٹ چلاتا ہے اور خود کو روشن پاکستان نامی ادارے کا ایگزیکٹیو ایڈیٹر بھی بتاتا ہے ۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ ضمیر خان کے غیر قانونی ہائیڈرنٹس منگھو پیر ، اتحاد ٹائون ، گڈاب ٹائون ، بنارس سمیت دیگر علاقوں میں بھی چل رہے ہیں جن کو واٹر بورڈ کا اینٹی تھیفٹ سیل سرپرستی کر رہا ہے ۔ اس حوالے سے ڈبلیو ٹی ایم کے سپرٹینڈنٹ انجنیئر تنویر احمد شیخ سے رابطے کیا گیا تاتم انہوں نے کال ریسیو نہیں کی ۔

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *