محمد علی جناح یونیورسٹی کراچی میں ذہنی صحت سے متعلق سیمینار ، میلے کا انعقاد

کراچی : کورونا کی وبا نے معاشرے میں ذہنی صحت کو بری طرح متاثر کیا ہے ، بہت سے لوگ زندگی کی جنگ مایوسی اور خوف کی وجہ سے ہار گئے مگر ہم کو ہمت نہیں ہارنی چاہیے ، ہم اس وبا سے جنگ اپنے خوف پر قابو پا کر ہی لڑ سکتے ہیں اور یہ بات بھی یاد رکھنی چاہیے کہ ماضی کے حوالے سے منفی اور مضر سوچ ہمیں آگے بڑھنے سے روکتی ہے۔ معاشرے میں ذہنی صحت کو متاثر کرنے کے لئے اور بھی عوامل موجود ہیں جن میں سے ایک دوستی اور صحبت کا اثر بھی ہمارے ذہنی صحت کو متاثر کرتا ہے۔ ان خیالات کا اظہار یار ملک کے ممتاز ماہر نفسیات نے گزشتہ روز محمد علی جناح یونیورسٹی کراچی (ماجو ) کے نفسیات کے شعبے کی جانب سے یونیورسٹی کیمپس میں ” دباؤ کو شکست دیں اور اپنے اندرونی نقاد کو فتح کریں” کہ عنوان سے منعقد ہونے والے ایک سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے کیا ماجو کی پرسنل کریکٹر ڈویلپمنٹ سوسائٹی اور ماجو مینٹل ہیلتھ کلب کے تعاون سے ذہنی صحت سے متعلق ایک میلے کا بھی انعقاد کیا گیا تھا جس میں ایک بڑی تعداد میں طلبہ اور اساتذہ نے شرکت کی۔

سیمینار سے پروفیسر ڈاکٹر اقبال آفریدی، پروفیسر ڈاکٹر رضا الرحمٰن، پروفیسر ڈاکٹر قدسیہ طارق، پروفیسر ڈاکٹر زینب ایف زادہ، نمرہ اسد، ماجو کے صدر پروفیسر ڈاکٹر زبیر شیخ اور شعبہ نفسیات کی سربراہ مریم حنیف غازی نے خطاب کیا۔ ماہرین نفسیات نے سیمینار میں اپنے بصیرت افروز مقالے پڑھے جن میں بتایا گیا کہ صحت مندانہ مقابلہ کرنے کی حکمت عملی سے کس طرح اپنا ذہن بدلا جاسکتا ہے اور اس بات کا بھی ادراک ہونا چاہئے کہ مرتبہ کے اثر و رسوخ کی بنا پر فیصلے کس طرح ہمارے نقطہ نظر پر اثر انداز ہوتے ہیں اور کوئی غیر ضروری مقابلہ کیسے کر سکتا ہے۔

ماہرین نے جذباتی سامان ، مختلف ذہنی صحت کے چیلنجز کی وضاحت کرتے ہوئے ان عوامل پر روشنی ڈالی جن کی بنا پر ہم کو معاشرے کی ذہنیت کو سامنے رکھتے ہوئے فیصلے کرنے پڑتے ہیں اور خاص طور پر اکیڈمیاں کی دنیا میں ذہنی صحت کے لیے ایک جامع روک تھام کی سوچ کی تخلیق اور ان پر عملدرآمد کے لیے ضروری ہوتے ہیں۔

ماجو کے نفسیات کے شعبے کے سربراہ مریم حنیف غازی کا کہنا تھا کہ اس پروگرام کے انعقاد کا مقصد نفسیات کے شعبے سے تعلق رکھنے والے افراد کی ایک موثر پلیٹ فارم کی تشکیل، کی چیلنجز کا مقابلہ کرنے اور مواقع فراہم کرنے کے معاملات پر تبادلہ خیال کرنا تھا۔

اس موقع پر ذہنی صحت کے میلے کا بھی اہتمام کیا گیا تھا جس میں تفریحی سرگرمیوں اور شخصیات کی جانچ کے لیے مختلف اسٹالز بھی لگائے گئے تھے جو طلباء کے ساتھ ساتھ عملے کے ممبران کو بھی بہت سارے ذہنی دباؤ جانے کے لیے مفید ثابت ہوئے ۔

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *