جنگ بدر اور پاک فوج

جنگ بدر اور پاک فوج

تھے ان کے پاس دو گھوڑے،چھ زرہیں،آٹھ شمشیریں
بدلنے آئے تھے یہ لوگ، دنیا بھر کی تقدیریں
(حفیظ جالندھری)

یہ شعر عظیم المرتبت واقعہ بدر کی طرف اشارہ کرتا ہے جو دین اسلام کی بنیادیں مضبوط کرنے والی پہلی اور
عظیم فتح کی علامت سمجھا جاتا ہے

اس زبردست فتح میں لڑنے والے فوجیوں کی تعداد 313 تھی اور مخالف فوج کی 1200 یعنی 3 سو گنا زیادہ تھی۔۔

اور ان 313 فوجیوں کے پاس لڑنے کو محض 8 تلواریں ، مخالف کے وار سے بچنے کو صرف 6 زرہیں، سواری کو آسانی سے تلوار کی زد میں آنے والے بڑے جثے کی حامل 80 اونٹ 🐫 اور تیز رفتار جانوروں میں صرف اور صرف 2 گھوڑے🏇 تھے

اتنے بڑے فرق کے باوجود مخالفین کو نہ صرف ہار کی زبردست دھول چٹائی، بلکہ عجیب و غریب جیت سے دین اسلام کی بنیادیں مضبوط کیں اور یہ ثابت کیا کہ جنگ لڑنے کو بڑا بجٹ نہیں قوی ایمان کی ضرورت ہوتی ہے ۔۔

علامہ اقبال نے اس حوالے سے کیا خوب کہا ہے کہ
کافر ہے تو شمشیر پہ کرتا ہے بھروسہ
مومن ہے تو بے تیغ بھی لڑتا ہے سپاہی
بغیر کسی طنز و مزاح کے آج ہم وطن عزیز کے اعلی افسران پر نظر ڈالیں تو کیا ہمیں حمیت و غیرت کا جنازہ نکلتا دکھائی نہیں دیتا

کیا ہم آج اسلحے کی خریداری میں مقابلے کی فضا پیدا نہیں کر چکے

کیا ہم بھی نمبر گیم میں مبتلا نہیں ہو چکے

کیا آج فوج پر تنقید خود کو غدار قرار دلوانے کے مترادف نہیں ہو چکا

کیا ہم میں سے اکثر پڑھا لکھا فرد اور کاروباری طبقہ فوج کی خوشنودی کےلیے شب و روز مصروف عمل نہیں رہتا

کیا فوج پر تنقید کو خوف سے بڑھ کر
موت کی علامت نہیں سمجھا جاتا

پاک فوج سے مراد پاکستانی فوج کی بجائے کیا آج واقعی پاک کا مطلب مقدس اور فرشتوں کی بھرتی شدہ فوج نہیں سمجھا جاتا

انسان خطا کا پتلا ہے اگر یہ بات درست سمجھیں تو کیا فوج غلطی کرنے والے انسانوں پر مشتمل نہیں ہے

پھر کیا وجہ ہے کہ فوج کی اصلاح ایک سویلین نہیں کر سکتا

پھر کیا وجہ ہے کہ کوئی سولین تو یکلخت فوج کے کسی بڑے
رتبے و مقام پر نہیں جا سکتا لیکن کوئی بھی ریٹائرڈ فوجی کسی بھی اعلیٰ سے اعلیٰ بڑے سول عہدے پر فائز ہو جاتا ہے

کیا یہ ممکن ہوگا کہ واقعہ بدر سے ہم کچھ سیکھتے ہوئے کم سے کم اسلحے کے باوجود قوت ایمانی کو بڑھانے میں اپنی صلاحیتوں کو استعمال کریں اور اپنے بجٹ کی ترجیحات بدلیں

کیا یہ ممکن ہوگا کہ فوج پر تنقید کو غداری کے زمرے سے نکال کر ایک اصلاحی سوچ سمجھ کر ناقدین کو بھی محب وطن ہی سمجھا جائے

کہ ہمیں اپنے ملک و ملت اور اپنی فوج سے اتنی ہی محبت ہے جتنی کہ کسی فوجی کو ہو سکتی ہے

ملک_القلم

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *