کراچی، حلقہ 249 میں ضمنی انتخابات لیکن ہزارہ وال رہنما ٹکٹ سے محروم

کراچی: این اے 249 حلقہ ھزارہ وال کا ہے. لیکن سیاسی جماعتوں نے ھزارہ وال کو ٹکٹ کے قابل نہیں سمجھا. ھزارہ کے سیاسی مداری ھزارہ کے بعد اب قوم کے باشعور نوجوانوں کو کراچی مین بھی غلام بنا کر رکھنا چاہتے ھین ۔ ہزارہ کے سیاستدانوں نے ھمیشہ اپنے مفاد کو ھزارہ پر ترجیح دی ھے ،

ان خیالات کا اظہار نعیم اشرف ترجمان تحریک صوبہ ہزارہ حقیقی پاکستان معروف تحریک رہنماء اور ترجمان صوبہ ھزارہ حقیقی پاکستان نعیم اشرف نے کراچی مین آباد ھزارہ وال کے گرینڈ جرگہ کے رہنماؤں سے بات کرتے ہوئے کیا۔

ان کا کہنا تھا کہ حلقہ 249 ہزارہ وال کا ہے. اور سیاسی جماعتوں نے کسی بھی ھزارہ وال کو ٹکٹ نہیں دیا. اب ھزارہ سے جو لیڈر کراچی آ رہے ھین انہوں نے اپنی پارٹی قیادت سے کبھی نہیں کہا کہ یہ ھمارے لوگوں کا حلقہ ہے اسلیے ٹکٹ ھمارے منتخب نام کو دیا جائے . تاکہ ھم بھی ھزارہ وال کو کہ سکیں آپکو پارٹی نے ٹکٹ دے کر عزت دی ھے اور اب ووٹ دیکر اس عزت کو بحال رکھین.

مزید پڑھیں: آل پاکستان تنولی اتحاد کا صوبہ ہزارہ کے قیام کے لیے تحریک صوبہ ہزارہ کی حمایت کا اعلان

کراچی انے والے سیاسی کاسہ لیسوں نے کم از کم کسی ہزارہ وال کو ہی ٹکٹ دلوا دیا ھوتا تو بھی بات بن جاتی اور ہمیں خوشی ہوتی کہ ہمارا اپنا ہزارہ وال الیکشن لڑ رہا ہے اور اس وقت سیاسی لوگ بھی اس کی مہم چلاتے ہوے اچھے لگتے اور ہم بھی کسی حد تک قائل ہوتے کہ اپنا ہزارہ وال ہی تو ہے.

لیکن یہ حیرت ناک بات یہ ہے کہ یہ سیاسی مگرمچھ ہزارہ سے آ کر یہاں ہزارہ وال کے اس حلقے میں بھی میمن برادری کی حمایت کر رہے ھین جب کہ اس امیدوار یہ بھی نہیں پتہ کہ ھزارہ وال کے کیا مسائل ھین. اور حیرت ناک بات یہ ھے کہ ھزارہ کے سیاسی مداری نہ صرف خود اس امیدوار کو بھرپور سپورٹ کر رے ہیں بلکہ یہاں حلقے مین آباد ھزارہ وال کو بھی مجبور کر رے ہیں کہ آپ بھی ایک ایسے شخص کو ووٹ دو جو کبھی بھی آپکے حقوق کیلئے آواز بلند نہیں کرے گا.

یہ ان سیاستدانوں کی ایک چال ھے کیونکہ وہ کراچی کے ھزارہ وال کو بھی محکوم رکھنا چاہتے ہیں اور کراچی سے ابھرتی ہوئی سوچ سے خوف زدہ ہیں یہ لوگ ھمارے حق اور ھماری شناخت کو اب کراچی سے بھی ختم کرنے کیلئے آۓ ہی.اور کوشش کر رہے ھین کہ ان کے کہنے پر کراچی کا ھزارہ وال ایک ایسے شخص کے پیچھے چلین جو نہ تو انکے حقوق و تحفظ کی بات کرتا ہے اور نہ ہی کبھی پارلیمنٹ مین بات کرے گا..

مزید پڑھیں: سواتی، افغانستان سے سوات اور پھر ہزارہ آئے

کیونکہ ان سیاستدانوں نے خود کبھی اپنی مٹی اور اپنے ووٹرز کیلئے بات نہیں کی تو کراچی کا میمن بھائی ھماری کیا بات کرے گا لیکن شاید یہ سیاسی مداری نہیں جانتے کہ وقت بدل گیا ھے اب اقوم ان مداریوں کے قول اور فعل میں تضاد کو سمجھ چکی ھے اب یہ ایک بار پھر 12 اپریل کی طرح قوم کے ساتھ دھوکہ اور مزاق کر رھے کیلئے آۓ ھین

نعیم اشرف نے کراچی کے ھزارہ وال سے اپیل کی کہ خدا کیلئے ان سیاسی مداریوں سے بچو اور خود کی سیاسی شناخت کیلئے منصف جان ایڈوکیٹ کا بحیثیت قوم ساتھ دو تاکہ ان مداریوں کو سمجھ لگے کہ اب قوم کو جنبہ، برادری اور صوبہ ھزارہ کا نام سے گمراہ نہیں کیا جاسکتا.

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *