سفرِ بلوچستان کا دلچسپ و منفرد احوال : قسط اول

اسرار ایوبی

سفر نگار : اسرار ایوبی 

ای او بی آئی(EOBI) ایمپلائیز ٹریول اینڈ ٹورز کلب کے زیر اہتمام بلوچستان کے ساحلی مقامات کا تفریحی دورہ، کنڈ ملیر، ماتا مندر، ہنگول نیشنل پارک،پرنسس آف ہوپ، اورماڑہ، جیوانی، پاک ایران سرحد اور مستقبل کے دبئی، گوادر تک کے سفر کی روداد !

مصروف ترین شہری زندگی، روزمرہ کی بھاگ دوڑ، سڑکوں پر گاڑیوں کے اژدہام، ٹریفک جام اور دفاتر میں کام کے دباؤ اور یکسانیت کا ماحول انسان کو شدید جسمانی اوراعصابی تھکن میں مبتلا کردیتے ہیں۔ شہر کی ایسی مصروف ترین اور یکساں زندگی سے چند دنوں کا چھٹکاراپا کر اگر قدرتی ماحول اور مناظر فطرت کا نظارہ کرنے کے لئے خوبصورت اور صحت افزاء مقامات کی سیر و تفریح کی جائے تو یہ عمل انسان کو پھر سے تازہ دم کر دیتا ہے ۔ ہمارے ادارہ ای او بی آئی (EOBI) میں سفر اور سیر و تفریح کے دلدادہ ساتھیوں نے ملک کے مختلف قابل دید اور دلکش مقامات کے سفر اور سیرو تفریح کے لئے ای او بی آئی ایمپلائیز ٹریول اینڈ ٹورز کلب کے نام سے ایک انجمن قائم کی ہوئی ہے۔ جس کے زیر اہتمام وقتا فوقتا بحیرہ عرب کی سیر، کیماڑی، مبارک ولیج اور سنہرا پوائنٹ کے مقام سے گہرے سمندر میں مچھلیاں پکڑنے اور ملک کے مختلف دلفریب اور خوبصورت تاریخی و تفریحی علاقوں کے دوروں کے پروگرام بھی ترتیب دیئے جاتے ہیں۔

ای او بی آئی کے افسران ہنگول نیشنل پارک میں

ان تمام ساتھیوں میں وطن عزیز کے دور دراز صحت افزا ء اور تاریخی مقامات اور وہاں کے دلفریب مناظر سے بیحد دلچسپی پائی جاتی ہے۔اس دفعہ سیر وتفریح کے لئے قرعہ فال مکران کوسٹل ہائی وے کے ساتھ ساتھ واقع تاریخی و تفریحی مقامات ساحل کنڈ ملیر، ماتا مندر، ہنگول نیشنل پارک،پرنسس آف ہوپ، اورماڑہ، جیوانی،پاک ایران سرحد اور گوادر اور بلوچستان کے دیگر تاریخی اور تفریحی مقامات کی سیر کا نکلا۔

لہذاء اس بار کلب کے زیر اہتمام 20 تا 24 مارچ 2021 کو ملک کے سب سے بڑے صوبہ بلوچستان کے مختلف دور افتادہ اور خوبصورت ساحلی اور تفریحی مقامات کی سیاحت کے چار روزہ دورہ کا اہتمام کیا گیا۔ جس میں ادارہ کے حاضر ملازمت اور ریٹائرڈ ملازمین نے اپنے بڑھاپے اور مختلف امراض میں مبتلا ہونے کے باوجود بڑے ذوق و شوق سے شرکت کی۔جبکہ بعض ساتھی خواہش کے باوجود اس یادگار سفر میں شرکت نہ کر سکے ۔

اس یادگار دورہ میں جناب محمد ندیم اقبال، ڈپٹی ڈائریکٹر جنرل،آئی ٹی ڈپارٹمنٹ، مرزا اویس سعید احمد، سابق ڈپٹی ڈائریکٹر جنرل لاء ڈپارٹمنٹ، جناب اقتدار رحیم خان، سابق ڈپٹی ڈائریکٹر جنرل، آڈٹ ڈپارٹمنٹ، ا سرار ایوبی، سابق افسر تعلقات عامہ و سیکریٹری مجلس نفاذ اردو، ای او بی آئی،جناب نجیب اللہ خان، اسسٹنٹ ڈائریکٹر آپریشنز، علاقائی دفتر ویسٹ وہارف، جناب محمد ابراہیم فاروقی، سابق اسسٹنٹ ڈائریکٹر، لاء ڈپارٹمنٹ،جناب مختار علی، ایگزیکٹیو افسر بینی فٹس ڈپارٹمنٹ، علاقائی دفتر کورنگی، جناب شاہد اختر، سابق ایگزیکٹیو افسر، آئی ٹی ڈپارٹمنٹ اورجناب عبدالعلیم ملک،جنرل افسر، پاکستان پٹرولیم لمیٹڈ بطور مہمان شامل تھے۔ مرزا اویس سعید احمد کی ہمہ جہت شخصیت اور قائدانہ صلاحیت کو مد نظر رکھتے ہوئے انہیں امیر سفر مقرر کیا گیا۔ اس سلسلہ میں کراچی سے ایک آرام دہ ائیر کنڈیشنڈ ہائی ایس وین کرائے پر حاصل کی گئی تھی۔کوئٹہ سے تعلق رکھنے والے 35 سالہ تجربہ کار اور ماہر ڈرائیور محمد فاروق محمد حسنی اس قافلہ کے کیپٹن تھے ۔

گوادر سن سیٹ پارک سے غروب آفتاب کا خوبصورت منظر

ای او بی آئی سیاحتی گروپ نے بلوچستان کے خوبصورت ساحلی مقام کنڈ ملیر، ہندؤں کے مقدس استھان ماتا مندر، ہنگول نیشنل پارک،پرنسس آف ہوپ، اورماڑہ، جیوانی، پاک ایران سرحد BP-250 (چاہ بہار راہداری) گوادر شہر، گوادر فش ہاربر،سنیٹر محمد اسحاق بلوچ کرکٹ اسٹیڈیم، نوتعمیر شدہ گوادر سن سیٹ پارک کی خوب سیر کی اوروہاں ایک بلند پہاڑی مقام سے غروب آفتاب کے خوبصورت منظرکا نظارہ بھی کیا۔

اگرچہ ہمارے کلب کے تمام دوست سفر اور سیر و تفریح اور مچھلی کے شکارکے بیحد دلدادہ ہیں۔لیکن چند دوستوں میں تو یہ شوق اور جذبہ کچھ زیادہ ہی عروج پرپایا جاتا ہے۔ ان میں ایک نوجوان ساتھی نجیب اللہ خان کلب کے سب سے فعال رکن ہیں۔ جو سیر وتفریح اور مچھلی کے شکار کے ہر قسم کے پروگراموں کے انتظامات میں پیش پیش رہتے ہیں۔جن میں سفر کے دوران پینے کے پانی، چائے، مشروبات، ریفرشمنٹ، مچھلیوں کے شکار کے لئے ڈور، کانٹے اور چارہ وغیرہ کا بڑے اہتمام سے بندوبست کرتے ہیں اوراپنی تمام ذمہ داریاں احسن طریقہ سے نبھاتے ہیں۔ انہیں ملک کے مختلف تاریخی اور تفریحی مقامات کے متعلق کافی معلومات بھی حاصل ہیں۔ نجیب اللہ ایک شوقیہ فوٹوگرافر بھی ہیں اور ان مقامات کے سفر کے دوران یہ ہر زاویہ سے مناظرکی تصاویر اور وڈیو بھی بناتے ہیں۔اسی طرح مختار علی کو بھی جنون کی حد تک سیر و تفریح،مچھلی اور پرندوں کے شکار کا بیحد شوق ہے۔ وہ اپنے شوق کی تکمیل کے لئے اکثر و بیشتر ابراہیم حیدری،پورٹ قاسم اور کینجھر جھیل اور اندرون سندھ جاتے رہتے ہیں۔

محمد ندیم اقبال ڈپٹی ڈائریکٹر جنرل آئی ٹی ڈپارٹمنٹ گوادر سن سیٹ پارک میں

مختار علی ایک تجربہ کار تیراک بھی ہیں اور نہروں، جھیلوں اور کھلے سمندر میں بلا دخوف و خطر تیراکی بھی کرتے ہیں۔ جب کہ ہمارے ایک اور زندہ دل اور رومانی طبیعت کے حامل شاہد اختر کو قدرت نے سریلی آواز سے نوازا ہے۔ وہ پورے دوران سفر ساتھیوں کو اپنی گائیکی سے بھرپور انداز سے لطف اندوز کرتے رہے۔جس کے باعث طویل سے طویل سفر کے دوران بھی دوستوں کو کسی قسم کی بوریت محسوس نہیں ہوئی۔

شاہد اختر نے گوادر کے قیام کے دوران ہوٹل مرجان کے ڈائننگ ہال میں ایک شب اپنے فن کا زبردست مظاہرہ کیا اور مختلف نغمے سناکر کلب کے ساتھیوں سمیت ہوٹل میں مقیم دیر سیاحوں سے بھی خوب داد وصول کی۔ کلب کے ارکان نے ان چار دنوں کے سفر کے دوران بلوچستان کی مختلف ساحلی علاقوں کا تقریبا 1400 کلو میٹر سے زائد کا سفر طے کیا اور اس دوران انہیں صوبہ بلوچستان کے ساحلی علاقوں کے چپہ چپہ دیکھنے، گوادر شہرکی تیزرفتار اقتصادی ترقی،مختلف علاقوں کے دلفریب اورقدرتی مناظرسے بھرپورمقامات، زیر زمین قیمتی معدنیات سے مالا مال خطہ اوربیش بہا سمندری دولت کے باوجود بلوچستان کے عوام کے مسائل، حالت زار اورسماجی پسماندگی کے مشاہدہ کا سنہری موقعہ میسر آیا۔ بلوچستان کے حالیہ چار روزہ دورہ کے دوران ان درج ذیل تاریخی اور سیاحتی مقامات کی سیر کی گئی ۔

جاری ہے ۔

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *