سندھ، ربیز کنٹرول پروگرام کے تحت 30 ہزار سے زائد کتوں کو ویکسین لگادی گئی، انجم احمد شاہ

سیکرٹری بلدیات

کراچی(اسٹاف رپورٹر) سیکرٹری لوکل گورنمنٹ سندھ سید نجم احمد شاہ نے کہا ہے کہ عدالت عالیہ کے احکامات کی پیروی اور عوام کی جانوں کا تحفظ ہر قیمت پر یقینی بنائیں گے، انسانی زندگیوں پر کوئی سمجھوتہ قابل قبول نہیں۔ ربیز کنٹرول پروگرام کے تحت تیس ہزار سے زائد کتوں کو ویکسین لگادی گئی ہے۔

ان خیالات کا اظہار سیکرٹری بلدیات سندھ سید نجم احمد شاہ نے نمائندہ الرٹ نیوز سے خصوصی بات چیت کے دوران کیا۔ سیکرٹری لوکل گورنمنٹ سندھ نے بتایا کہ نوے کڑوڑ روپے سے زائد لاگت کا ربیز کنٹرول پروگرام اب ایک نئے فیز میں داخل ہورہا ہے جس کے تحت کتوں کی نسل و بڑھتی آبادی کو قابو کرنے کے لئے جدید آلات، آپریشن تھیٹر ٹیبلز ، ویکسین ، وہیکلز ، آئی ڈی چپ اور دواوں کی خریداری کا عمل مکمل کیا جائے گا، جدید سائنٹفک بنیادوں پر آوارہ کتوں کی نس بندی کی ذریعے سرجری کا عمل انسانی زندگیوں کے تحفظ میں اہم کردار ادا کرے گا۔

مزید پڑھیں: ہماری کرکٹ کو فکسنگ نے تباہ کردیا، جاوید میانداد

نجم احمد شاہ کے مطابق ربیز کنٹرول پروگرام کے تحت صرف کراچی میں تیس ہزار سے زائد آوارہ کتوں کو ویکسین کے ذریعے بے ضرر بنایا جایا چکا ہے فلاحی ادارے کے تعاون سے صوبے کے تمام اضلاع میں کامیاب کاوشیں بروئے کار لائی جائیں گی۔ سیکرٹری بلدیات سندھ نے بتایا کہ کتوں کی آبادی کنٹرول کرنے کے لئے حکومت سندھ نے ترقی یافتہ ممالک کی طرح طریقہ کار وضع کیا ہے جو کہ صوبہ سندھ کی انفرادیت اور طرہ امتیاز ہے۔

سیکرٹری بلدیات سندھ نے بتایا کہ کراچی کی سطح پر تین علاج گاہیں کتوں کی نس بندی اور سرجری کے حوالے سے فعال ہیں اور تمام صوبے کے اندر اس ہی طرز کے اقدامات بروئے کار لائے جائیں گے۔ نجم احمد شاہ کے مطابق نوابشاہ میں بھی آپریشن تھیٹر اور علاج گاہ کے حوالے سے جگہ کا انتخاب عمل میں آچکا ہے۔ مستقبل کے اقدامات کے حوالے سے آگاہ کرتے ہوئے سیکرٹری لوکل گورنمنٹ سندھ نے بتایا کہ اگلے چند روز میں ربیز کنٹرول پروگرام کے حوالے سے ضروری اشیا کی خریداری کے لئے باقاعدہ ٹینڈر کا اجرا بھی کردیا جائے گا اور مکمل شفافیت اور میرٹ کے ساتھ سارے عمل کو انجام تک پہنچایا جائے گا۔

مزید پڑھیں: کورونا کے باعث اسلام آباد کے مختلف علاقوں میں لاک ڈاؤن

سیکرٹری لوکل گورنمنٹ سندھ نے مزید بتایا کہ سندھ کے وہ اضلاع جہاں فی الوقت نس بندی کا جدید طریقہ کار زیر استعمال نہیں ان تمام علاقوں میں متبادل قانونی طریقہ کار کے تحت کتوں کی آبادی کنٹرول کرنے کے لئے کاوشیں بروئے کار لائی جائیں گی جس کے مثبت اثرات جلد نظر آنا شروع ہوجائیں گے۔

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *