مدارس کے فضلاء کیلئے سی ایس ایس (CSS) کا موقع

مدارس کیلئے سی ایس ایس امتحان

سنٹرل سپیرئر سروس، آسان الفاظ میں ملکی سطح پر سرکاری اداروں میں گریڈ 17 میں آفیسر بھرتی کرنے کا سب سے بڑا امتحان ہوتا ہے ۔ جو وفاقی ادار ہ ( FPSC (فیڈرل پبلک سروس کمیشن لیتا ہے ۔ سی ایس ایس کو امتحانوں کا K2 بھی کہا جاتا ہے ۔

آٹھ سال مدرسے میں رہ کر مجھے اس کے بارے علم نہیں تھا. فراغت کے بعد کرونا کی وبا پھیلی تو ہم سب گھروں میں گویا محصور ہو گئے ۔ انہی دنوں مجھے معلوم ہوا کہ CSS نام کا بھی ایک امتحان ہوتا ہے۔ اور مجھے یقین ہے میری طرح دسیوں کو اب بھی اس کے بارے علم نہیں ہوگا۔ علم ہوتے ہی میں نے پہلی فرصت میں فیصلہ کر لیا کہ "میں نے CSS کا K2 سر کرنا ہے۔” اور دو چار ماہ سے اسی کی تیاری کررہا ہوں ۔ آگے تقدیر کے فیصلے کے لیے سر خم تسلیم ہے ۔

سی ایس ایس کا امتحان سال میں ایک بار ہوتا ہے اور نہایت قابل اور مستقل مزاج امیدواروں کی سلیکشن کی جاتی ہے۔ امتحام میں کامیاب ہونے والے) Aspirants خواہش مند ( افراد کو بیوروکریسی میں شامل کیا جاتا ہے ۔ بیوروکریسی ملکی مشینری میں ریڑھ کی ہڈی کہ حیثیت رکھتی ہے۔ یدرحقیقت بیوروکریسی ہی حکومت چلا رہی ہوتی ہے ۔

ہر سال FPSC اس امتحان کا اعلان اشتہار کی صورت میں بذریعہ اخبار کرتی ہے۔ اور اکتوبر کے مہینے میں اس کے فارم جمع ہوتے ہیں. دو یا تین ماہ بعد رول نمبرز آتے ہیں اور فروری کے مہینے میں امتحان ہوتا ہے۔ جس میں 4 قسم کے ٹیسٹ ہوتے ہیں۔

ابتدائی طور پرصرف ایک امتحان ہوتا ہے۔

1۔ تحریری امتحان written test

تحریری امتحان پاس کرنا ضروری ہوتا ہے۔ اس کے پاس کرنے کے بعد تین ٹیسٹ ہوتے ہیں.

2۔ نفسیاتی امتحان Psychological test

3۔ طبعی امتحان medical test ، واضح رہے ہیں کہ معذور افراد بھی CSS کا امتحان دے سکتے ہیں اور ان کے لیے 2 فیصد کوٹہ ہے.

4۔ زبانی امتحان vivavoce/interview.

امتحان کس چیز کا لیا جاتا ہے ؟

سی ایس ایس کا باقاعدہ نصاب ہے جو FPSC نے شائع کیا ہوا ہے. اس کی مکمل تفصیل کچھ یوں ہے۔

نصاب ، مضامین کے حساب سے دو حصوں میں تقسیم ہے۔

1:- لازمی مضامین – Compulsory Subjects

2:- اختیاری مضامین – Optional Subjects

:ـ لازمی مضامین 6 ہیں.

1:- English Essay

2:- English Precis and Composition

3:- General Science and Ability

4:- Current Affairs

5:- Pakistan Affairs

6:- Islamic Studies.

:ـ اختیاری مضامین کل 47 ہیں , جن میں سے 6 مضامین کا انتخاب کرنا ہوتا ہے. لیکن یہ 47 مضامین الگ الگ 7 گروپس میں تقسیم ہیں. جن میں سے 6 یا 5 گروپ آپ نے سلیکٹ کرنا ہوتے ہیں ۔ ہر گروپ میں سے ایک مضمون کا انتخاب کرنا ہوتا ہے. ہر مضمون 100 نمبر کا ہوتا ہے. بعض مضامین 200 نمبر کے ہوتے ہیں, جس کا مطلب یہ ہے کہ ایک مضمون کے 2 پیپر دینا ہوتے ہیں۔ اس صورت میں پانچ مضامین سلیکٹ کرنا ہوتے ہیں.

سی ایس ایس کا امتحان 1200 نمبرز پر مشتمل ہوتا ہے۔ 600 لازمی اور 600 اختیاری مضامین کے۔ لازمی مضمون 44 جبکہ اختیاری مضمون 33 نمبر پر پاس ہوتا ہے۔ آپ نے ان 6 گروپ میں سے اگر ایک مضمون 200 نمبر کا منتخب کیا تو آپ مزید 4 مضمون منتخب کر سکتے ہیں.

امتحان پاس کرنے کے بعد ؟

ان سارے مراحل سے گذرنے والے کامیاب امیدوار کو درجہ ذیل 12 گروپس میں کوئی ایک گروپ دیا جاتا ہے. جس کے لیے پہلے 6 ماہ ٹرینگ دی جاتی ہے اور اس کے بعد پوسٹنگ ہوتی ہے.

1. Districts Management Group

2. Police Services of Pakistan

3. Custom and Excise

4. Postal group

5. Income tax group

6. Information group

7. Foreign Services of Pakistan

8. Commerce and Trade

9. Military lands and Cantonments

10. Office Management group

11. Pakistan Audit and Accounts

12. Railways (commercial & transportation) group.

اہلیت :

عمر 21-30 سال(کچھ صورتوں میں رعایت ہے) جیسے سرکاری ملازم ، معذور امیدوار ، (تسلیم شدہ قبیلے قبائلی علاقہ جات ، بلوچ قبائل ، ڈی آئی خان اور پشاور ڈویژن، ڈیرہ غازی خان اور راجن پور ڈسٹرکٹ وغیرہ

٢۔ پاکستانی اور آزاد جموں و کشمیر کے شہریت والے افراد اہل ہیں۔

٣۔ تعلیم کے اعتبار سے کم از کم گریجویٹ (BA / BSc) سیکنڈ کلاس یا C grade یا اس کے مساوی , کیا ہوا ہو۔

علماء کی ضرورت.

سی ایس ایس کو ایک ہوّا بنا دیا گیا ہے. ہمارے سامنے اس قدر مشکل بنا کر پیش کیا ہے کہ ہم سوچتے ہی , گھٹنے ٹیک دیتے ہیں. حالانکہ ایسا نہیں ہے. پچھلے سال بھی مدرسے کے ایک فاضل معاذ الرحمان نے بہترین نمبروں سے پاس کیا ہے. اور ان سے پہلے بھی ایک دو پاس کر چکے ہیں. لیکن اصل بات یہ ہے کہ مدارس کے طلباء و فضلاء کو اس امتحان کا علم تک نہیں ہے. اور اگر ضرورت کی بات کی جائے تو اس فیلڈ میں علماء کا آنا بے انتہاء ضروری ہے۔ اس ضرورت کو میں الفاظ میں شاید بیان نہ کر سکوں, لیکن جب فاضل خود اس فیلڈ کے ماہرین سے سنے گا تب انہیں اندازہ ہوگا۔

امتحان کی تیاری کیسے کریں۔؟

میں چونکہ خود اس فیلڈ میں نیا وارد ہوا ہوں, لہٰذا میرا نظریہ فی الحال اس بارے ناقص ہو سکتا ہے. لیکن ابھی تک جو ٹیچرز نے بتایا یا سمجھایا ہے ۔ وہ بنیادی دو چیزیں ہیں۔ انگریزی کا سیکھنا اور مستقل مزاجی سے پڑھنا. کتاب, اخبار وغیرہ۔ ٹی وی شوز وغیرہ دیکھنا. چونکہ یہ امتحان انگریزی میں ہوتا ہے, اس لیے مدارس کے فضلاء کے لیے کم از کم ایک سال انگریزی زبان سیکھنے کے لیے وقف کرنا ہوگا. اس کے بعد مقابلے کی تیاری شروع ہوگی.

اب چونکہ علماء اور محبین علماء کو اس کی ضرورت کا اندازہ ہوگیا ہے تو اسلام آباد, لاہور میں باقاعدہ فضلاء کے لیے CSS کی فری تیاری کرانے کے لیے اکیڈمی بن گئیں ہیں۔ ( اور امید ہے کہ جلد کراچی میں بھی بن جائیں.گیں)۔ اسلام آباد میں "تدبیر” جبکہ لاہور میں "APAS” اکیڈمی فضلاء کو سکالرشپ کی بنیاد پر ایک سالہ CSS کورس کرا رہی ہے۔ اس کے علاوہ کئی پرائیویٹ اکیڈمیز یہ کورس کرا رہی ہیں, لیکن مہنگے ہونے کی وجہ سے علماء کی پہنچ وہاں تک مشکل ہے.

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *