عبوری صوبے کے قیام سے گلگت بلتستان کی سات دہائیوں کی محرومیوں کا ازالہ ہوگا، محمد الیاس صدیقی

گلگت(نمائندہ خصوصی)گلوبل ٹائمز میڈیا رپورٹ کے مطابق عبوری صو بے کے قیام سے گلگت بلتستان کی سات دہائیوں کی محرومیوں کا ازالہ ہوگا عبوری صوبے کے قیام کیلئے گلگت بلتستان اسمبلی سے متفقہ قرارد پاس کروانے پر وزیر اعلیٰ خالد خورشید کو مبارکباد پیش کرتے ہیں۔

یہ باتیں منگل کے روز وزیر اعلیٰ گلگت بلتستان کے معاونین خصوصی محمد الیاس صدیقی، حاجی حیدر خان،حاجی محبوب اور سید شمس الدین(کوارڈینیٹر ز) نے ایک مشترکہ بیان میں کیا،

تفصیلات کے مطابق منگل کے روز حاجی حیدر خان کے آفس میں معاون خصوصی برائے وزیر اعلیٰ گلگت بلتستان کے دفتر میں وزیر اعلیٰ کے دیگر معاونین، برائے وزیر اعلیٰ محمد الیاس صدیقی، حاجی حیدر خان، حاجی محبوب اور سید شمس الدین کے ایک مشترکہ اجلاس منعقد ہوا۔

جس میں انہوں نے صوبائی اسمبلی گلگت بلتستان کے جانب سے وزیر اعلیٰ گلگت بلتستان خالد خورشید کی قیادت میں عبوری صوبے کیلئے مشترکہ قرارداد کی متفقہ طور پر منظوری پر خراج تحسین پش کرتے ہوے ایک مشترکہ بیان میں کیا، وزیر اعلیٰ کا معاونین کا مشترکہ اجلاس منسٹرز سیکرٹریٹ نذد چائینہ ٹریڈ منعقد ہوا۔

مزید پڑھیں: گلگت میں پاک فوج کے ہیلی کاپٹر حادثہ میں 5 افراد شہید

اجلاس میں وزیر اعلیٰ کے معاونین، کوآرڈینیٹرزنے گلگت بلتستان اسمبلی سے عبوری صوبے کے قیام کی متفقہ قرارداد اسمبلی سے پاس کروانے پر وزیراعلیٰ کو مبارکباد پیش کرتے ہوئے اسے تاریخی کارنامہ قراردیا۔انہوں نے بہترین حکمت عملی اور سیاسی بلوغت کا مظاہرہ کیا۔

انہوں نے کہا کہ سابقہ ادوار میں صرف عوام کو دھوکہ دینے کی حد تک آئینی حقوق کے حوالے سے بیانات دیئے گئے۔وزیر اعلیٰ خالد خورشید کی قیادت میں گلگت بلتستان کی 73 سالہ محرومیوں کا ازالہ ہوگا اور بہت جلد گلگت بلتستان عبوری صوبہ بنے گا۔انہوں نے کہا کہ PDM ملک عزیز پاکستان میں ایک فتنہ بن کر سامنے آیا ہے اور اقتدار کے ہوس میں اس حد تک بوکھلائے ہوئے ہیں کہ جاوید لطیف جیسے لوگ ملک کے خلاف بولنے لگے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ ملکی سالمیت ہمیں جان سے عزیز ہے اور ہر ملک دشمن کا حشر بانی ایم کیو ایم جیسا ہوگا۔انہوں نے سینٹ الیکشن میں تاریخی فتح پر وزیر اعظم پاکستان اور وزیر اعلیٰ گلگت بلتستان کو مبارکباد بھی پیش کی۔انہوں نے مزید کہا کہ وزیر اعلیٰ گلگت بلتستان کی قیادت میں جی بی کو ایک مثالی صوبہ بنایا جائیگا۔واضح رہے یکم نومبر کو یوم آذادی گلگت بلتستان کے موقع پر گلگت میں مرکزی تقریب میں گلگت بلتستان کو عبوری صوبے کا قیام کا باقاعدہ اعلان کیا تھا،

صوبائی اسمبلی نے مشترکہ طور عبوری آئینی صوبے کی قرار داد متفقہ طور پر منظوری دیکر وزیر اعظم پاکستان کے اعلان کو عملی جامع پہنانے میں ممدو معاون ثابت ہوگی۔

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *