حکومت کا کووڈ ویکسینیشن ویک منانے کا فیصلہ

رپورٹ : بابر علی اعوان

پاکستان میں کورونا وائرس سے بچاؤ کی ویکسین لگوانے کے انکاری کیسز میں اضافے پر حکومت نے کووڈ 19 ویکسینیشن ویک منانے کا فیصلہ کیا ہے جس میں ویکسینیشن کی کوریج بڑھانے کے لئے پرنٹ ، الیکٹرانک اور سوشل میڈیا کے ذریعے آگہی مہم چلائی جائے گی اور اہم مقامات پر بل بورڈز، پوسٹرز اور چارٹس کے ذریعے ویکسین سے متعلق طبی عملے کے خدشات دور کیے جائیں گے ۔

مہم آج (22فروری ) سے شروع ہوکر 28فروری کو ختم ہو جائے گی ۔ مہم کے دوران اچھی کارکردگی دکھانے والے افسران کی پذیرائی کی جائے گی ۔

مزید پڑھیں: الطاف حسین کورونا وائرس کا شکار ہو کر ICU منتقل

واضح رہے کہ ملک میں کورونا سے بچاؤ کی ویکسین لگانے کا عمل 3 فروری سے شروع ہوا لیکن اس دوران طبی عملے کی جانب سے ویکسین لگوانے سے انکار کا سلسلہ جاری رہا جس پر تین ہفتے بعد حکومت نے ویکسینیشن ویک منانے او ر خدشات دور کرنے کا فیصلہ کیا ۔ ماہرین صحت کے مطابق آگہی دینے کا یہ سلسلہ اگر تین ہفتے قبل شروع کر دیاجاتا تو اس وقت ہزاروں کے بجائے لاکھوں ہیلتھ کیئر ورکرز ویکسین لگوا چکے ہوتے ۔

یہاں یہ امر قابل ذکر ہے کہ حکومت کی جانب سے پہلے انکاری کیسز کے اعتراف سے گریز کیا گیا اور ویکسین کے حوالےسے طبی عملے کے خدشات دور نہیں کیے گئے۔

مزید پڑھیں: پاکستان میں کورونا ویکسی نیشن کی منظوری

سندھ میں اس کے برعکس طبی عملے کو ڈرایا گیا اور ویکسین نہ لگوانے والوں کو ہیلتھ رسک الاؤنس سے محروم کر دیا گیا جبکہ سیکریٹری صحت کی جانب سے ایم ایس سول اسپتال کراچی سے وضاحت بھی طلب کی گئی اور ضلعی صحت کے افسران پر برہمی کا بھی اظہار کیا گیا تاہم اب انکاری کیسز کے باضابطہ اعتراف کے بعد اگہی مہم کے اعلان سے ماہرین صحت امید کر رہے ہیں کہ عملے کے خدشات دور ہوں گے اور سست روی کا شکار مہم تیزی پکڑے گی ۔

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *